پاکستان تحریک انصاف نے فنانس بل پیش کر دیا

پاکستان تحریک انصاف نے فنانس بل پیش کر دیا
فوٹو/ اسکرین گریب نیو نیوز

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف کی حکومت نےفنانس بل 2019  پیش کر دیا ۔


قومی اسمبلی میں وفاقی وزیر خزانہ نے منی بجٹ پیش کرتے ہوئے کہا کہ لوگوں کے دماغ میں ہے کہ کوئی نیا بجٹ پیش کیا جارہاہے ،یہ بجٹ نہیں صنعتی ترقی کیلیے معیشت کی اصلاحات پیش کر رہاہوں ۔بجٹ نہیں اصلاحات کا پیکج پیش کررہاہوں ۔انہوں نے کہاکہ عوام نے مسائل کے حل اور ان کے ادراک کیلیے ایوان میں بھیجا ہے۔اپوزیشن نے حکومتیں کیں،دل کھول کر غلطیاں بھی کیں ان کے پاس 10سال حکومت رہی کیا معیشت چھوڑ کر گئے ؟یہ ملک کو ڈھائی سے 3 ہزار ارب روپے کا مقروض کرکے چلے گئے ۔

انہوں نے کہا کہ ایسی معیشت بنانی ہے کہ آئی ایم ایف کا آخری پروگرام ہو،ایسانہ ہواگلی حکومت آکرآئی ایم ایف کوفون کرےہم تباہی کےدہانے پر آگئے مدد کریں۔سال ختم ہوا تو بجٹ خسارہ 6.6 فیصد تھا ۔ریلوے ، پی آئی اے ، پاکستان اسٹیل میں رکارڈ خسارہ رہا ۔وزیرخزانہ نے کہا کہ عوام سمجھتی ہے مشکل فیصلے ناگزیر تھے۔اگلے ہفتے میڈیم ٹرم اکنامک فریم ورک پیش کریں گے ۔

اسد عمر نے کہا کہ تجارتی خسارہ اور کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ کم ہوا ہے۔برآمدات بڑھی ہیں اور درآمدات کم ہوئی ہیں۔ہماری محصولات اور اخراجات میں توازن تک معیشت ٹھیک نہیں کرسکتے ۔ہمیں برآمدات بڑھانی ہیں ۔جب تک سرمایہ کاری نہیں ہوگی معیشت ٹھیک نہیں ہوسکتی ۔وزیر خزانہ نے کہا کہ صنعت ، تجارت اور زراعت کو آگے بڑھانے میں اپوزیشن ہماری رہنمائی کرے۔

فنانس بل 2019 کے مندرجات: 

وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے کہا کہ چھوٹے بزنس اداروں پر ٹیکس آدھا کیا جارہا ہے۔5 ارب کی قرض حسنہ کی اسکیم لارہے ہیں ۔فوری طور پر فائلر کی بینکنگ ٹرانزیکشن پر ودہولڈنگ ٹیکس ختم کیا جارہاہے ۔چھوٹے گھروں پر بینک قرض آمدنی کا ٹیکس39 سے کم کرکے 20 فیصد کررہے ہیں۔پانچ ارب روپے کا ریوالونگ فنڈ قائم کررہے ہیں۔نان فائلر800 سے 13 سو سی سی تک گاڑی خریدسکے گا۔نیوز پرنٹ پر امپورٹ ڈیوٹی ختم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے عمر نے کہا کہ حقیقی جمہوریت کیلیے آزاد صحافت چاہیے۔صنعتی خام مال پر ڈیوٹیز کم اور کچھ پر ختم بھی کررہے ہیں ۔درآمدی موبائل اور سیٹلائٹ فون پر سیلز ٹیکس کی شرح میں اضافہ،30 ڈالر سے کم قیمت کے موبائل پر سیلز ٹیکس 150 روپے ہو گا۔30 سے 100 ڈالر قیمت کے درآمدی موبائل پر 1470 روپے سیلز ٹیکس عائد،100 سے 200 ڈالر قیمت کے درآمدی موبائل پر 1870 روپے سیلز ٹیکس عائد،200 سے 350 ڈالر قیمت کے درآمدی موبائل پر 1930 روپے سیلز ٹیکس عائد،350 سے 500 ڈالر قیمت کے درآمدی موبائل پر سیلز ٹیکس 6000 روپے سیلز ٹیکس عائد،500 ڈالر سے زائد قیمت کے درآمدی موبائل پر 10300 روپے سیلز ٹیکس عائد کر دیا گیا ۔حکومت نے شادی ہال پر ٹیکس 20 ہزار سے کم کرکے5 ہزار روپے کردیا ۔ہم چاہتےہیں سولر پینل اور ونڈ ٹربائن یہاں بنے۔حکومت نے یکم جولائی سے بینکنگ آمدن پر سپر ٹیکس ختم کیا جارہاہے۔جولائی سے نان بینکنگ کمپنیوں کا سپر ٹیکس ختم کر دیا ۔