پاکستانی انجینئروں کی ڈگریاں اب امریکا اور یورپ میں قابلِ قبول ہونگی

پاکستانی انجینئروں کی ڈگریاں اب امریکا اور یورپ میں قابلِ قبول ہونگی

الاسکا : پاکستان انجینئرنگ کونسل (پی ای سی) کی جانب سے جاری بیان کے مطابق اس سے قبل پاکستان انجینئرنگ کونسل کے پاس واشنگٹن اکارڈ کی عارضی رکنیت تھی. تاہم مستقل ملنے کے بعد پاکستانی انجینئروں کی ڈگریاں اب امریکا اور یورپ میں بھی قابل قبول ہوں گی۔


بیان میں کہا گیا کہ پہلے پاکستانی انجینئرز کو بیرون ملک مزید تعلیم اور ملازمت کے لیے اضافی امتحان دینے ہوتا تھا. لیکن تنظیم کی مستقل رکنیت سے پاکستانی انجینئرز پر عائد اضافی امتحان کی شرط ختم ہوگئی ہے۔

پی ای سی کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ پہلے مرحلے میں انجینئرنگ یونیورسٹی لاہور اور ٹیکسیلا، غلام اسحٰق خان انسٹیٹیوٹ اور نَسٹ کے گریجویٹ فائدہ اٹھا سکیں گے، جبکہ مستقبل میں سوا 2 لاکھ پاکستانی انجینئروں کے لیے امریکا اور یورپ میں اعلیٰ تعلیم اور نوکری تک رسائی آسان ہوگی۔پاکستان کی طرف سے پاکستان انجینئرنگ کونسل کے چیئرمین انجینئر جاوید قریشی نے مستقل رکنیت کے دستاویزات پر دستخط کیے۔

امریکا کی ریاست الاسکا میں جاری واشنگٹن اکارڈ کی بین الاقوامی کانفرنس میں پاکستان کو تنظیم کا مستقل رکن بنانے کی منظوری دے دی گئی۔

 نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں