غذاؤں میں شامل چربی اور چکنائی سے سالانہ 5 لاکھ ہلاکتیں

غذاؤں میں شامل چربی اور چکنائی سے سالانہ 5 لاکھ ہلاکتیں

فوٹو بشکریہ سوشل میڈیا

کھانوں میں استعمال ہونے والے کوکنگ آئل اور گھی میں پائی جانے والی چربی اور چکنائی سے دنیا بھر میں سالانہ 5 لاکھ ہلاکتیں ہوتی ہیں۔

عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے مطابق گھی اور کوکنگ آئل  میں شامل کی جانے والی مختلف سبزیوں، نباتات اور جانوروں سے حاصل کی گئی ٹرانس فیٹ یعنی چکنائی اور چربی انسانی صحت کے لیے مضر ہے، جس سے امراض قلب سمیت کئی دوسری  بیماریاں پیدا ہوتی ہیں۔

 رپورٹ کے مطابق گھی اور کوکنگ آئل میں جدید طریقے اور فیکٹریوں کے اندر شامل کی جانے والی چکنائی اور چربی سے انسان مختلف بیماریوں میں مبتلا ہوکر موت کے منہ میں جا رہے ہیں۔

خیال رہے کہ عالمی ادارہ نے کھانوں اورغذاؤں میں استعمال ہونے والے ہر طرح کے گھی اور کوکنگ آئل سے چکنائی اور چربی ختم کرنے کے لیے رواں برس مئی کے مہینے میں ایک مہم کا آغاز بھی کیا تھاعالمی ادارہ صحت نے گھی اور کوکنگ آئل سے چکنائی اور چربی ختم کرنے کی مہم کا آغاز کرتے ہوئے دنیا کے تمام ممالک کی حکومتوں سے مطالبہ کیا تھا کہ ٹرانس فیٹ کے استعمال کی حوصلہ شکنی کے اقدامات اٹھائے جائیں۔

ڈبلیو ایچ او  کا  تمام ممالک سے مطالبہ تھا کہ گھی اور کوکنگ آئل سے ٹرانس فٹ کو آئندہ 5 سال تک بلکل ختم کیا جائے گا۔

ادارے نے دنیا کے تمام ممالک کو 2023 تک چربی اور چکنائی کو گھی اور کوکنگ آئل سے ختم کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا تھا جس سے بے شمار قیمتی انسانی جانیں ضائع ہو رہی ہیں۔

مہم کے آغاز کے بعد فوری طور پر امریکا اور برطانیہ کے کئی ممالک نے گھی اور کوکنگ آئل سے چکنائی اور چربی ختم کرنے کے اقدامات کا آغاز کردیا تھا۔تاہم پاکستان سمیت کئی ممالک نے فوری طور پر اس حوالے سے تاحال ٹھوس اقدامات نہیں اٹھائے۔

مزید خیال رہے کہ ٹرانس فیٹ کیمیکل سمیت جدید طریقوں سے سبزیوں، نباتات اور جانوروں سے نکالا گیا تیل ہوتا ہے، جسے چربی اور چکنائی بھی کہا جاتا ہے۔

ٹرانس فیٹ کو عام طور پر ڈبہ پیک کھانوں کو کافی وقت تک تازہ رکھنے کی غرض سے گھی اور کوکنگ آئل میں شامل کیا جاتا ہے۔ماہرین کے مطابق چکنائی اور چربی سے امراض قلب، موٹاپے اور بلڈ پریشر سمیت کئی دوسری بیماریاں پیدا ہوتی ہیں، جو انسان کی موت کا سبب بنتی ہیں۔