سردار یار محمد رند کا وزارت سے مستعفی ہونے کا اعلان

سردار یار محمد رند کا وزارت سے مستعفی ہونے کا اعلان
کیپشن: سردار یار محمد رند کا وزارت سے مستعفی ہونے کا اعلان
سورس: فائل فوٹو

کوئٹہ: شہریار آفریدی کی کوشش ناکام ہو گئی، پاکستان تحریک انصاف کے صوبائی وزیر سردار یار محمد رند نے وزارت سے مستعفی ہونے کا اعلان کر دیا۔

وزیر تعلیم بلوچستان سردار یار محمد رند نے گزشتہ روز شہریار آفریدی کو مستعفی نہ ہونے کا یقین دلانے کے بعد آج مستعفی ہونے کا اعلان کر دیا ہے۔ 

بلوچستان اسمبلی اجلاس سے خطاب میں انہوں نے کہا میں صوبائی حکومت میں مزید نہیں رہ سکتا کیونکہ میرے علاقے میں امن کمیٹیاں بنائی گئی ہیں اور میرے خاندان کو کچھ ہوا تو اس کے ذمہ دار جام کمال کو سمجھا جائے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم بلوچستان عوامی پارٹی (بی اے پی) کے اتحادی ہیں۔ کاش اپوزیشن اراکین آج اس ایوان میں ہمارے ساتھ ہوتے۔ آج ایوان میں اپوزیشن اور وزیراعلیٰ دونوں موجود نہیں ہیں۔

سردار یار محمد رند کا کہنا تھا کہ میں نے محکمہ تعلیم کی وزارت کو چیلنج سمجھ قبول کیا تھا۔ میں نے محکمہ تعلیم کی پوسٹنگ اور ٹرانسفر میں کوئی مداخلت نہیں کی۔ سردار یار محمد نے کہا کہ اسمبلی سے نکلتے ہی استعفیٰ گورنر بلوچستان کو پیش کر دوں گا۔

گزشتہ روز چیئرمین کشمیر کمیٹی شہریار آفریدی نے وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال اور پی ٹی آئی بلوچستان کے پارلیمانی رہنما یار محمد رند سے علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کیں تھیں جس کے بعد دونوں میں اختلافات ختم ہونے کا امکان پیدا ہوا ہے۔ ملاقاتوں میں شہریار آفریدی نے جام کمال اور یار محمد رند کو اختلافات دور کرنے کی درخواست کی۔

یار محمد رند نے صوبائی حکومت سے متعلق اپنے تحفظات سے شہریار آفریدی کو آگاہ کیا  اور وزارت سے استعفے کی پیش کش بھی کی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ شہریار آفریدی نے وزیر تعلیم کو استعفیٰ نہ دینے پر قائل کیا اور یار محمد نے بھی استعفیٰ نہ دینے کا وعدہ کیا۔

شہریار آفریدی نے یار محمد رند کو تحفظات دور کرانے کی بھی یقین دہانی کرائی۔ وزیر اعلیٰ بلوچستان نے بھی یار محمد رند سے ملاقات پر آمادگی کا اظہار کیا  اور  یقین دہانی کرائی کہ  یار محمد کے تحفظات دور کریں گے۔