سمارٹ فونز صارفین کی لوکیشن معلومات اکٹھی کر کے گوگل کو بھجوا رہے ہیں

سمارٹ فونز صارفین کی لوکیشن معلومات اکٹھی کر کے گوگل کو بھجوا رہے ہیں

نیویارک:امریکی نیوز ویب سائٹ کوارٹز کی تحقیقاتی رپورٹ میں صارفین کے رازداری حقوق سے متعلق خطرے کی گھنٹی بجاتے ہوئے انکشاف کیا گیا ہے کہ اسمارٹ فونز صارفین کی لوکیشن معلومات اکٹھی کرکے گوگل کو بھجوا رہے ہیں۔


تفصیلات کے مطابق اگر صارفین لوکیشن سروس کو بند بھی کر دیں تب بھی زیادہ تر اینڈرائیڈ اسمارٹ فونز، لوکیشن کی معلومات اکٹھی کرکے گوگل کو بھجواتے ہیں۔اینڈرائیڈ فونز صارف کے آس پاس کے اسمارٹ فونز سے معلومات اکٹھی کرتے ہیں جس سے صارف کی لوکیشن معلوم ہو جاتی ہے اور یہ معلومات گوگل کو موصول ہو رہی ہوتی ہے۔رپورٹ کے مطابق اگر سیٹنگز میں لوکیشن سروسز بند بھی ہوں، تب بھی اسمارٹ فونز یہ معلومات اکٹھی کرتے ہیں اور اگر فون میں سم کارڈ نہ بھی ہو تو تب بھی فون کو یہ معلومات اکٹھی کرنے سے روکنے کے لیے اس میں کوئی آپشن موجود نہیں ۔