سرکاری املاک، دستاویزات پر سیاستدانوں کی تصاویر لگانے پر پابندی عائد

سرکاری املاک، دستاویزات پر سیاستدانوں کی تصاویر لگانے پر پابندی عائد

اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان نے سرکاری املاک اور دستاویزات پر سیاستدانوں اور پبلک آفس ہولڈرز کی تصاویر لگانے پر پابندی عائد کر دی ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ نے راولپنڈی کی کچی آبادی سے متعلق فیصلہ جاری کر دیا جو جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے تحریر کیا ہے۔ 

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ سرکاری وسائل پر ذاتی تشہیر کی اجازت نہیں دی جا سکتی، پاکستان کسی کی جاگیر نہیں جہاں عوام حکمرانوں کے سامنے جھک جائیں۔

سپریم کورٹ نے کہا کہ جمہوری ساکھ کو برقرار رکھنے کیلئے چوکنا رہنا ہو گا، سرکاری املاک پر ذاتی تشہیر کیلئے تصاویر چسپاں کرنا اخلاقی اقدار کو مجروح کرتا ہے، تمام چیف سیکرٹریز اور وفاقی انتظامیہ عدالتی فیصلے پر عملدرآمد یقینی بنائیں۔

مصنف کے بارے میں