دنیا کے 10کروڑ سے زیادہ افراد اپنی شناخت سے محروم ہیں:عالمی بینک

دنیا کے 10کروڑ سے زیادہ افراد اپنی شناخت سے محروم ہیں:عالمی بینک

نیویارک:عالمی بینک نے انکشاف کیا ہے کہ دنیا کے ایک ارب 10کروڑ سے زیادہ افراد اپنی شناخت سے محروم ہیں اور انکے پاس ایسی کوئی دستاویز نہیںجس سے وہ اپنا وجود یا اپنی شناخت ثابت کرسکیں۔ 


تفصیلات کے مطابق عالمی بینک نے ”شناخت برائے ترقی “ نامی پروگرام کے حوالے سے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ اپنی شناخت سے محروم ان لوگوں کی اکثریت افریقہ و ایشیا سے تعلق رکھتی ہے تاہم وہ اپنی روزمرہ زندگی کسی شناخت یا تشخص کے بغیر زندگی گزار رہے ہیں اور اسکانتیجہ یہ ہے کہ انسانوں کی اتنی بڑی تعداد نہ صرف بنیادی ضروریات اور سہولتوںسے بھی محروم ہے بلکہ تعلیم تک بھی انکی رسائی نہیں ہے اور نہ ہی صحت کا کوئی پرسان حال ہے۔ان کے رہن سہن کی کوئی جگہ نہیں اوراسی بے مکانی یا بے کسی کی حالت میں وہ زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔ان لوگوں میں ایک تہائی تعداد بچوں کی ہے جن کی پیدائش کااندراج ہی کہیں نہیں کرایا گیا۔

ورلڈ بینک کے آئی ڈی فور ڈی پروگرام کی نگراں وجنتی ڈیسائی کاکہنا ہے کہ یہ صورتحال مختلف عوامل کی پیدا کردہ ہے مگر سب سے بڑا عنصر یہ ہے کہ عام آدمی کی رسائی سرکاری سہولتوں تک نہیں اور نہ ہی اس جانب توجہ دی جارہی ہے۔ بہت سے خاندانوں کو بچوں کی پیدائش کا اندراج کرانے کی اہمیت کا بھی اندازہ نہیں اور اگرانہیں معلوم بھی ہے تو برتھ سرٹیفکیٹ کا حصول بھی اچھے خاصے خرچ کا سبب ہے۔ ایسے بچوں کا اگر اسکول میں داخلہ ہو بھی جائے تو بغیر برتھ سرٹیفکیٹ کے کام چل جاتا ہے۔

عالمی ادارے کاکہناہے کہ مسئلے کا واحد حل یہ ہے کہ ایسے بے شناخت لوگوں کو شناخت اور پہچان دینے کا کام پوری منصوبہ بندی کے ساتھ انتہائی نچلی سطح سے کیا جائے۔ عالمی ادارے نے اس حوالے سے 2005ءمیں ایک مہم شروع کی تھی جس کے طفیل دنیا کے 32ممالک کے 4کروڑ سے زیادہ بچوں کا رجسٹریشن ہوچکا ہے مگر اب بھی کروڑوں بچے کسی رجسٹریشن کا حصہ نہیں۔