صدر کے پروٹوکول کے خلاف آواز اٹھانا شہری کو مہنگا پڑ گیا،مقدمہ درج کرلیا گیا

صدر کے پروٹوکول کے خلاف آواز اٹھانا شہری کو مہنگا پڑ گیا،مقدمہ درج کرلیا گیا
فائل فوٹو

کراچی :صدر کے پروٹوکول کے خلاف آواز اٹھانا شہری کو مہنگا پڑ گیا جبکہ پروٹوکول کیخلاف احتجاج کرنے پر فکس اٹ کے ارکان کیخلاف مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔


کراچی آمد پر صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کے ساتھ موجود پروٹوکول کی گاڑیوں اور اس پروٹوکول کی وجہ سے عوام کو ہونے والی پریشانی پر ڈاکٹر عارف علوی کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا گیا اور کہا گیا کہ پاکستان تحریک انصاف کے تبدیلی اور سادگی کے نعرے دھرے کے دھرے رہ گئے۔

عارف علوی کے پروٹوکول کی ایک ویڈیو سامنے آئی ہے جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ڈاکٹر عارف علوی کے لیے رکاوٹیں لگا کر عوام کا راستہ بند کیا جا رہا ہے۔ویڈیو میں موجود شخص کا کہنا ہے کہ یہ راستہ میرے گھر کو جاتا ہے اور اسے روٹ لگا کر بند کیا ہوا ہے۔جس پر انہیں سیکیورٹی پر مامور اہلکار کہتا ہے کہ صرف پانچ منٹ انتظار کر لیں۔اس روٹ سے گھروں کو جانے والے لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

تاہم اب صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کا پروٹوکول توڑنے، کار سرکار میں مداخلت اور شہریوں کو غلط کام پر اکسانے والے ایک شہری کے خلاف شارع فیصل تھانے میں مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔ پولیس کے مطابق صدر مملکت عارف علوی کے قافلے کو گزارنے کے لئے گزشتہ رات 9 بجے شارع فیصل پر کار ساز کے قریب ٹریفک بند کی گئی تھی اس دوران نامعلوم شخص روکی گئی ٹریفک میں اپنی گاڑی کھڑی کر کے سب سے آگے نکل آیا اور ٹریفک روکنے والے پولیس اہلکاروں سے الجھ پڑا۔

پولیس کے مطابق مذکورہ شخص خود ویڈیو بھی بنا رہا تھا۔شہری نے پولیس کی جانب سے روکے جانے پر شہریوں کو کہا کہ وہ پولیس کے کہنے پر نہ رکیں، رکاوٹیں توڑ کر ٹریفک کھول دیں اور ملزم کے اکسانے پر کئی موٹر سائیکل سوار رکاوٹیں توڑ کر آگے نکل آئے۔

پولیس کے مطابق اس دوران لوگ جمع ہوئے تو وہ مجمع کی آڑ میں فرار ہوگیا جبکہ پولیس وی وی آئی پی موومنٹ کی وجہ سے مزید کارروائی نہیں کرسکی بعد ازاں اعلیٰ حکام کی ہدایت پر شارع فیصل ٹریفک سیکشن کے ایس او سب انسپکٹر محمد سلیم نے نامعلوم ملزم کے خلاف مقدمہ درج کرادیا ہے۔کار سرکار میں مداخلت اور شہریوں کو کسی غلط کام پر اکسانے والے ملزم کی تلاش شروع کردی گئی ہے۔