'العزیزیہ اور ایون فیلڈ ریفرنس، نواز شریف کے وارنٹ گرفتاری کی تعمیل کیلئے تیار ہیں'

'العزیزیہ اور ایون فیلڈ ریفرنس، نواز شریف کے وارنٹ گرفتاری کی تعمیل کیلئے تیار ہیں'
نواز شریف کے بیٹے کے سیکرٹری نے لندن میں پاکستانی ہائی کمیشن سے رابطہ کیا، ایڈیشنل اٹارنی جنرل۔۔۔۔۔۔۔۔فائل فوٹو

اسلام آباد: العزیزیہ اور ایون فیلڈ ریفرنس کیس کے حوالے سے ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ نواز شریف وارنٹ گرفتاری کی تعمیل کیلئے تیار ہیں۔ ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کاؤنٹی کورٹ سے نوازشریف کے وارنٹ کی تعمیل کی رپورٹ جمع کرانے کیلئے اسلام آباد ہائیکورٹ سے مہلت مانگ لی اور سماعت غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کرنے کی درخواست کر دی۔


احتساب عدالت کی جانب سے العزیزیہ اور ایون فیلڈ ریفرنس میں نوازشریف کی سزا کے خلاف اپیلوں پر اسلام آباد ہائیکورٹ میں سماعت ہوئی۔ جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل بینچ نے سماعت کی۔

سماعت کے دوران ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ نوازشریف کے بیٹے کے سیکرٹری نے لندن میں پاکستانی ہائی کمیشن سے رابطہ کیا، نوازشریف وارنٹ گرفتاری کی تعمیل کیلئے تیار ہیں۔

اس موقع پر  جسٹس عامر فاروق نے کہا کہ وارنٹ کی تعمیل کےلیے اس طرح طویل عرصہ کے لیے سماعت ملتوی نہیں کرسکتے جس کے بعد  عدالت نے سماعت 30 ستمبر تک ملتوی کردی۔

واضح رہے کہ احتساب عدالت نے 6 جولائی 2018 کو ایون فیلڈ ریفرنس میں نواز شریف کو 10 سال قید اور جرمانے جبکہ ان کی صاحبزادی مریم نواز کو 7 سال قید اور جرمانے ، کیپٹن (ر) صفدر کو ایک سال قید کی سزا سنائی تھی جس کے خلاف اسلام آباد ہائی کورٹ سے رجوع کیا گیا تھا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے 19 ستمبر 2018 کو ایون فیلڈ ریفرنس میں احتساب عدالت کی جانب سے نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کو سنائی گئی سزا معطل کرتے ہوئے تینوں کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا تھا۔

نواز شریف نے ایون فیلڈ کیس میں سزا کے خلاف اپیل دائر کر رکھی ہے تاہم عدالت نے ان کی درخواست مریم اور صفدر کی درخواست سے علیحدہ کردی ہے اور العزیزیہ ریفرنس میں ضمانت ختم ہونے اور عدالت میں پیش نہ ہونے پر ان کے وارنٹ گرفتاری جاری کیے جا چکے ہیں۔