اپوزیشن دباؤ ڈال کر این آر او لینے کی کوشش چھوڑ دے ، ڈاکوؤں اور چوروں کو رعایت نہیں ملے گی، وزیراعظم عمران خان

اپوزیشن دباؤ ڈال کر این آر او لینے کی کوشش چھوڑ دے ، ڈاکوؤں اور چوروں کو رعایت نہیں ملے گی، وزیراعظم عمران خان
File Photo

پشاور : وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ  فضل الرحمان  سیاست کا 12 واں کھلاڑی ہے  اپوزیشن دباؤ ڈال کر این آر او لینے کی ناکام کوشش کر رہی ہے  کسی صورت ڈاکوؤں اور چوروں کو این آر او نہیں دیں گے۔  مولانافضل الرحمان کی قیمت کشمیر کمیٹی کی چیئرمین شپ اور ڈیزل کا پرمٹ ہے۔ 


 

تفصیلات کے مطابق ، وزیراعظم عمران خان نے وانا میں جلہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا  قبائلی لوگوں نے کشمیر کیلئے  جہاد  کیا ،زیادہ انگریزوں کے فوجی وزیرستان میں مارے گئے تھے، قبائلی لوگوں نے 1965 کی جنگ پاک فوج کے شانہ بشانہ جنگ لڑی۔ قبائلی عوام نے آزادی کی جنگ پوری طاقت سے لڑی، میں ہمیشہ پارلیمنٹ میں قبائلی عوام کی آواز بنا۔ 

انہوں نے کہا کہ ہمارے اکثر سیاستدانوں کو پختوانخوا اور قبائلی علاقوں میں فرق ہی معلوم نہیں ہے ،  قبائلی عوام  کے رہن سہن اور روایات پر کتاب لکھی ہے جس کی وجہ سے مجھے قبائلی عوام کے مسائل کا مکمل ادراک ہے۔

 

وزیر اعظم نے کہا کہ واحد سیاستدان تھا جو وزیرستان میں فوج بھیجنے کیخلاف تھا، قبائلی عوام کواپنی روایات کے برعکس گھر بار چھوڑنے پڑے۔  دہشتگردی کیخلاف جنگ میں قبائلی عوام کے نقصان سے آگاہ ہوں، عدل و انصاف ہی ریاست کا سب سے بڑا اصول ہے  قبائلی عوام کو مکمل انصاف دلاؤں گا۔

 

وزیراعظم اپوزیشن پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ 2 جماعتوں نے ملک کو قرضے کی دلدل میں دھکیلا، منی لانڈرنگ سے معیشت کو نقصان پہنچا  اور روپے کی قدر کم ہوتی گئی۔  نواز شریف اور آصف زرداری نے  ملک لوٹا اور پیسہ باہر لیکر گئے، 2008 سے 2018 تک ملکی قرضہ 6 ہزار ارب سے بڑھ کر 30 ہزار ارب ہوگیا۔ گزشتہ 10 برسوں میں ملکی قرضوں میں ریکارڈ اضافہ ہوا، عوام پوچھتے ہیں کہ قرضے کا پیسہ کہاں گیا۔

وزیراعظم نے بلاول بھٹو کو صاحبہ کہہ دیااور کہا کہ  میں بلاول بھٹو صاحبہ کی طرح کسی پرچی پر نہیں آیا، پی پی اور ن لیگ نے 10 سال میں ملک پر 24 ہزار ارب کا قرض چڑھایا، قوم مطمئن رہے تمام کرپٹ لوگوں کا اکیلے ہی مقابلہ کروں گا۔