ٹرمپ قوم کو تقسیم کر رہے ہیں، دوتہائی امریکیوں کا خیال ،جائزہ رپورٹ میں انکشاف

ٹرمپ قوم کو تقسیم کر رہے ہیں، دوتہائی امریکیوں کا خیال ،جائزہ رپورٹ میں انکشاف

واشنگٹن:پاکستان مخالف بیان کے بعد امریکیوں نے ٹرمپ کو ایک خطرہ قرار دے دیا ،تفصیلات کے مطابق ایک نئی جائزہ رپورٹ میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ قوم کوجوڑنے کی بجائے اسے تقسیم کر رہے ہیں،سروے میں ان سے یہ سوال پوچھا گیا تھا کہ وہ شارلٹس ویل کے واقعہ پر ڈونلڈ ٹرمپ کے ردعمل کو کس طرح دیکھتے ہیں۔جمعرات کو امریکی نشریاتی ادارے کی رپورٹ میں ایک حالیہ سروے کے حوالے سے کہاگیاکہ تقریبا دو تہائی امریکیوں خیال ہے کہ صدر ٹرمپ قوم کو جوڑنے کی بجائے اسے تقسیم کررہے ہیں۔


امریکی یونیورسٹی کوانپیاک کے تحت کرائے گئے رائے عامہ کے ایک جائزے میں 62 فی صد جواب دہندگان کا کہنا تھا کہ ٹرمپ قوم کو تقسیم کرنے کی جانب بڑھ رہے ہیں۔ جب کہ 31 لوگوں کی رائے اس کے الٹ تھی۔یہ جائزہ رپورٹ اس مہینے ریاست ورجینیا کے ایک یونیورسٹی ٹان شارلٹس ویل میں سفید فام برتری کے حامی گروپ اور ان کے مخالفین کے درمیان تشدد پر عوام کے ردعمل کو ظاہر کرتی ہے۔

تشدد کے اس واقع میں اس وقت ایک عورت ہلاک ہو گئی جب ایک شخص نے اپنی گاڑی مجمع پر چڑھا دی۔صدر ٹرمپ نے ان مسائل اور شارلٹس ویل کے تشدد میں ملوث گروہوں پر کئی بیانات دیئے اور ہر روز انہوں نے اپنا موقف تبدیل کیا۔ جس پر امریکہ بھر میں زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے افراد انہیں اپنی تنقید کا نشانہ بنایا۔

مسٹر ٹرمپ کا تازہ ترین موقف یہ ہے کہ اس تشدد میں دونوں فریق قصور وار ہیں۔سروے میں ان سے یہ سوال پوچھا گیا تھا کہ وہ شارلٹس ویل کے واقعہ پر ڈونلڈ ٹرمپ کے ردعمل کو کس طرح دیکھتے ہیں۔ 60 فی صد رائے دہندگان نے اسے مایوس کن قرار دیا۔ 32 فی صد نے کہا کہ وہ صدر کی رائے سے اتفاق کرتے ہیں۔

59 فی صد لوگوں کا کہنا تھا کہ صدر ٹرمپ کے رویے اور بیانات نے سفید فام بالادستی کے حامیوں کی حوصلہ افزائی ہوئی ہے۔ صرف 3 فی صد رائے دہندگان کا کہنا تھا کہ صدر کے بیانات سے سفید فام بالا دستی کے حامیوں کی حوصلہ شکنی ہوئی ہے۔35 فی صد کی رائے میں صدر ٹرمپ کے بیانات کا نہ تو سفید فام بالادستی کے حامیوں اور نہ ہی اس سوچ کے مخالفین پر کوئی اثر ہوا۔