راہول گاندھی , اپوزیشن رہنماوں کو سرینگر ایئر پورٹ سے واپس بھیج دیا گیا

راہول گاندھی , اپوزیشن رہنماوں کو سرینگر ایئر پورٹ سے واپس بھیج دیا گیا
قابض انتظامیہ نے کانگریس رہنماؤں کو وادی میں آنے سے منع کر دیا ہے۔۔۔۔۔۔۔فوٹو/ بشکریہ انڈیا میڈیا

سری نگر: بھارتی اپوزيشن پارٹی کانگریس کےرہنما راہول گاندھی کو سری نگر ایئر پورٹ سے ہی نئی دلی واپس بھیج دیا گیا ۔ راہول گاندھی اور ان کے ساتھیوں کو سری نگر ایئر پورٹ سے باہر ہی نہیں نکلنے دیا گیا ۔


اس موقع پر راہول گاندھی کا کہنا تھا کہ انہیں سری نگر میں داخل نہ ہونے دینے کا مطلب ہے کہ مودی سرکار کچھ چھپا رہی ہے۔ راہول گاندھی آج صبح سری نگر کے لیے روانہ ہوئے تھے ۔

روانگی سے پہلے راہول گاندھی کا کہنا تھا کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں قید رہنماؤں سے اظہار یکجہتی کریں گے۔

واضح رہے کشمیریوں کے حقوق چھیننےکے بعد مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی حکومت کی پابندیاں مسلسل 20 ویں روز بھی جاری ہیں۔ مواصلاتی رابطے منقطع ، کرفیو اور پابندیوں کے باعث کاروبار زندگی معطل ہے۔

سڑکوں پر قابض بھارتی فورسز کی نفری بدستور تعینات ہے۔ احتجاج سے خوفزدہ قابض انتظامیہ نے سڑکیں بلاک کر رکھی ہیں۔ وادی میں لاک ڈاؤن سے دواؤں اور کھانے پینے کی اشیا کی شدید قلت ہو گئی ہے۔

احتجاج روکنے کے لیے اب تک دس ہزار سے زائد کشمیریوں کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔

مقبوضہ کشمیر کے شہریوں کا کہنا ہے کہ ان کا کام سب ختم ہو چکا ہے۔ زندگی ختم ہو گئی ہے اسکول بند ہیں، حالات ٹھیک نہیں ہیں اور سب اپنے گھروں میں بند ہیں۔