دنیابھر سے ملیریا کا مکمل خاتمہ ممکن ہوگیا

دنیابھر سے ملیریا کا مکمل خاتمہ ممکن ہوگیا
image by facebook

نیویارک:ڈبلیو ایچ او نے دنیا سے ملیریا کے حیاتیاتی طور پر مکمل خاتمے کو ممکن قرار دے دیا ہے ، ادارے کے مطابق اس مقصد کے لیے سیاسی ارادے ، فنڈز اور نئے ٹولز کو بروئے کار لانے کی ضرورت ہے۔


ملیریا کے حوالے سے 3 سالہ سروے رپورٹ کے نتائج کی لانچنگ کے دوران ڈبلیو ایچ او کے ماہرین کا کہنا  تھا کہ کہ دنیا سے مچھر کے کاٹنے سے پھلینے  والی بیماری کا خاتمہ ممکن ہے تاہم اس مد میں آنے والا خرچہ اور حتمی تاریخ کے بارے میں کچھ کہنا قبل از وقت ہے۔

ڈبلیو ایچ او گلوبل ملیریا کے ڈائریکٹر پیڈرو النسو کا کہنا تھا کہ ملیریا کے خاتمے کے حوالے سے غیر معقول اہداف اور اس سے جڑے اخراجات کے بارے پہلے سے اندازہ لگانے سے مایوسی ہوسکتی ہے اور ردعمل بھی آسکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ دنیا کو ملیریا کے مکمل خاتمے کے حوالے سے پہلے مؤثر دوائیں اور ویکسین تیار کرنا ہوگی۔ ان کا کہنا تھا کہ موجودہ ادویات اور ٹولز سے ملیریا کا دنیا سے مکمل خاتمہ ممکن نہیں،النسو نے کہا کہ اس حوالے سے ہمیں پٹڑی پر واپس آنے پر توجہ دینے کی ضرورت ہے۔

عالمی ادارہ صحت کے سروے کے مطابق 2017 میں دنیا بھر میں 219 ملین لوگ ملیریا کی بیماری کا شکار رہے اور 43,000 ہلاکتیں ہوئیں۔ڈبلیو ایچ او کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں زیادہ تر افراد بشمول چھوٹے اور بڑے بچوں کا تعلق افریقہ کے غریب ترین علاقوں سے تھا۔

عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ آج دنیا میں بے شمار ممالک ایسےہیں جہاں ملیریا کا مکمل خاتمہ ہوگیا ہے۔ عالمی ادارہ صحت کے مطابق بہت سارے ممالک ایسے ہیں جہاں سال میں 1,000 سے کم ملیریا کی کیسز رپورٹ ہوئے۔

ڈبلیو ایچ او کے مطابق ملیریا سے زیادہ متاثر ممالک میں یہ بیماری کم ہونے کے بجائے بڑھ رہی ہے جس کے خاتمے کے لیے مشترکہ اور منظم کوششوں کی اشد ضرورت ہے۔

عالمی ادارہ صحت نے ملیریا کے خاتمے کے حوالے سائنسدانوں اور امداد فراہم کرنے والے ممالک پر زور دیا کہ وہ اس کے خاتمے کے لیے تحقیق کو بڑھانے کی مہم کی پھر سے تجدید کریں۔