نئی زندگی کی شروعات سے پہلے ہی دلہن کو قتل کر دیا گیا

نئی زندگی کی شروعات سے پہلے ہی دلہن کو قتل کر دیا گیا

تریپولی : لیبیا میں حال ہی میں  ایسا واقعہ پیش آیا جس نے ہر آنکھ کو اشکبار کر دیا ۔تفصیلات کے مطابق  شادی کے لیے تیار اور نئی زندگی کی شروعات کرنے کی منصوبہ بندی کرنے والی ایک دو شیزہ کو نامعلوم مسلح افراد نے فائرنگ کر کے جان سے مار دیا اور وہ اپنی تمام امنگیں اور خواہشیں لیے اس دنیا سے رخصت ہو گئی۔


العربیہ ڈاٹ نیٹ نے اس افسوسناک واقعے پر تفصیل سے روشنی ڈالی ہے۔ رپورٹ کے مطابق یہ واقعہ ایک نوجوان لڑکی فاطمہ التاجوری کی ہے۔ فاطمہ التاجوری کی شادی کے ایام مقرر کر دیے گئے تھے مگر کسی کو معلوم نہیں تھا جس گھر میں شادی کے شادیانے بجانے کی تیاری کی جا رہی ہے وہ ماتم کدہ بن جائے گا۔

بنغازی شہر کی رہائشی فاطمہ التاجوری اور اس کے اہل خانہ شادی کی تیاریوں مصروف تھے۔ وہ گاڑی پر بازار سے گھر لوٹ رہی تھی کہ راستے میں نامعلوم مسلح افراد نے اس پر اندھا دھند فائرنگ کر دی۔ فاطمہ کو کئی گولیاں لگیں جن میں سے ایک گولی فاطمہ کے دل میں پیوست ہو گئی جس کے باعث اس نے ہمیشہ ہمیشہ کے لیے آنکھیں بند کر لیں۔

فاطمہ التاجوری کی المناک موت پر ہر آنکھ اشک بار ہے۔ سوشل میڈیا پر اس کی عروسی لباس میں بنائی گئی تصاویر پوسٹ کی گئی ہیں جو اس بات کا ثبوت ہیں کہ وہ شادی کے لیے کس انہماک کے ساتھ تیاریوں میں مصروف تھی۔

مقامی سماجی کارکن رشد بساکری کا کہنا ہے کہ ایک ننھی دوشیزہ کو بغیر کسی جرم کے گولیاں مار قتل کرنے والے مجرم کسی ہمدردی اور رحم کے قابل نہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ فاطمہ التاجوری کی شہادت کا واقعہ ملک میں پھیلے بے حساب اسلحے اور اس کے غیرقانونی استعمال کا واضح ثبوت ہے۔