پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف امریکی جنگ لڑی، وزیراعظم

پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف امریکی جنگ لڑی، وزیراعظم
پاکستان نے امریکا کی جنگ میں ہزاروں قربانیاں دیں لیکن امریکا نے ہمیشہ پاکستان سے ڈومور کا مطالبہ کیا، عمران خان۔۔۔۔۔۔۔فوٹو/ اسکرین گریب

واشنگٹن: وزیراعظم عمران خان نے کیپیٹل ہل میں پاکستان کاکس کے امریکی کانگریس اراکین سے ملاقات کی۔ وزیراعظم نے اس موقع خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف امریکی جنگ لڑی اور ناقابل تلافی نقصان اٹھایا اور دونوں‌ ممالک کے مابین نائن الیون کے بعد غلط فہمیاں پیدا ہوئیں۔


وزیراعظم عمران خان جب کیپٹل ہل پہنچے تو امریکی ہاوس آف ریپریزنٹیٹو کی سپیکر نینسی پلوسی سمیت کانگریس اراکین نے ان کا شاندار استقبال کیا۔ نینسی پلوسی نے اپنے استقبالیہ خطاب میں کہا کہ وزیراعظم عمران خان کو کیپٹل ہل آمد پر خوش آمدید کہتے ہیں۔ جنوبی ایشیا میں امن کے لیے وزیراعظم عمران خان کی کوششوں کو سراہتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان اور امریکا کے تعلقات انتہائی اہم ہیں اور پاکستانی امریکا کی ترقی میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں۔ انسداد دہشت گردی اور منی لانڈرنگ کے خلاف پاکستان کا بھرپور تعاون حاصل ہے۔

تقریب سے خطاب میں وزیراعظم نے کہا کہ دورہ امریکا کے بعد تعلقات سچائی اور بھروسے پر مبنی ہوں گے اور یہاں آنے کا مقصد ہے کہ امریکی پاکستان کو سمجھیں۔ پاکستان نے دہشتگردی کے خلاف امریکی جنگ لڑی جس میں پاکستان کا ناقابل تلافی نقصان ہوا۔ پاکستان نے امریکا کی جنگ میں ہزاروں قربانیاں دیں لیکن امریکا نے ہمیشہ پاکستان سے ڈومور کا مطالبہ کیا۔ اس کی وجہ امریکا میں پاکستان سے متعلق غلط فہمی پائی جاتی تھی۔

عمران خان نے کہا کہ ماضی کی حکومتوں نے امریکا کو زمینی حقائق سے متعلق درست آگاہ نہیں کیا اور میں نے صدر ٹرمپ کو خطے کی حقیقی صورتحال سے آگاہی دی ہے۔ ٹرمپ پر واضح کر دیا تعلقات بھروسے اوربرابری کی سطح پر ہوں گے کیونکہ پاکستان اور امریکا کا مشترکہ مقصد خطے میں پائیدار امن کا قیام ہے۔