روزہ رکھنے والے مسلمان سکیورٹی رسک ہیں، ڈنمارک کی وزیر کی ہرزہ سرائی

روزہ رکھنے والے مسلمان سکیورٹی رسک ہیں، ڈنمارک کی وزیر کی ہرزہ سرائی
image by face book

کوپن ہیگن: ڈنمارک کی وزیر برائے امیگریشن انگر اسٹوج برگ نے روزہ رکھنے والے مسلمانوں کو معاشرے کے لیے سکیورٹی رسک قرار دیدیا۔


انگر اسٹوج برگ نے کہا ہے کہ ڈنمارک میں موجود مسلمان رمضان میں 18 گھنٹے تک کچھ کھانے پینے سے پرہیز کرتے ہیں، اس دوران وہ مختلف خطرناک مشینیں بھی آپریٹ کرتے ہیں جیسا کہ بس ڈرائیور ہیں جو بغیر کچھ کھائے پیئے بسیں چلاتے ہیں اور ان کا یہ عمل ہمارے تحفظ کے لیے خطرات پیدا کرسکتا ہے ۔

خاتون وزیر نے کہا کہ ڈنمارک میں موجود تمام مسلمان رمضان کے دوران اپنے کاموں سے چھٹیاں لیں تاکہ ہماری سوسائٹی منفی اثرات سے محفوظ رہ سکے۔