چین میں سیکڑوں لوگوں کو خودکشی سے بچانے والا شخص

چین میں ایک رحم دل شخص اب تک 300 لوگوں کو اپنی جان لینے سے بچاچکا ہے

چین میں سیکڑوں لوگوں کو خودکشی سے بچانے والا شخص

بیجنگ: چین میں ایک رحم دل شخص اب تک 300 لوگوں کو اپنی جان لینے سے بچاچکا ہے۔چین کے شہر نینجِنگ میں دریا پر بنا ایک پُل ہمیشہ سے ہی مایوس لوگوں کی خودکشی کا ایک مقام بنا رہا ہے۔ اسی جگہ خود اس چین سی نامی شخص نے اپنی زندگی ختم کرنے کی ٹھانی تو ایک بوڑھے شخص نے اپنی باتوں سے اس کی ہمت بڑھائی اور زندگی ختم کرنےسے باز رکھا۔ اس کے بعد خود چین سی نے اسے اپنا مشن بنالیا۔


چین سی 2003 سے اب تک چھٹی کے روز اس پل پر آتا ہے اور گھنٹوں یہاں گھوم کر لوگوں کو دیکھتا رہتا ہے جہاں اسے خودکشی کرنے والے افراد الگ سے نظر آجاتے ہیں اور یہ تنہا کھڑے ہوکر دریا یا زمین کو تکتے رہتے ہیں۔ چین سی کے مطابق مایوس افراد کے چلنے کا انداز بتاتا ہے کہ وہ اگلے لمحے اپنی جان ہاردیں گے۔

چین سی ہر شخص کو اس کی صورتحال کے لحاظ سے قابو کرتا ہے۔ جیسے ہی کوئی شخص پل کے کنارے پر آتا ہے چین اس کے پاس جاکر نرمی سے بات کرتا ہیں اور انہیں سمجھاتا ہے۔ کچھ لوگ مان جاتے ہیں جب کہ کچھ فوری طور پر چھلانگ لگانے کو تیار ہوتے ہیں تو چین اپنی پوری قوت سے اسے دبوچ لیتے ہیں۔

لیکن کچھ لوگ اسے گالیاں دینے اور تشدد سے بھی باز نہیں آتے اور خود چین پر حملہ کرکے انہیں زخمی کردیتے ہیں لیکن باہمت چین انہیں خودکشی سے بچانے کی آخری دم تک کوشش کرتے رہتے ہیں۔ تاہم زندگی دوبارہ ملنے والے لوگ چین کے شکرگزار ہیں۔

چین سی باز آنے والے مریضوں کو اپنے دوست کے گھر لے جاتا ہے اور وہاں انہیں کئی روز تک رکھ کر خوش رکھنے کی کوشش کرتا ہے۔ چین سی ان لوگوں کی مالی مشکلات دور کرنے کے لیے انہیں قرض بھی دیتا ہے۔ اب چین سی کو نینجنگ کا فرشتہ کہا جاتا ہہے اور 13 برس میں اب تک 300 افراد کی جان بچاچکا ہے لیکن 50 افراد چین کے قریب پہنچنے سے قبل ہی ڈوب کر ہلاک ہوگئے اور بہت کوشش کے باوجود بھی انہیں روکا نہ جاسکا۔