بھارت میں میچ فکسرز کیلئے 10 سال کی سزا

بھارت میں میچ فکسرز کیلئے 10 سال کی سزا

ممبئی : ہندوستان میں میچ فکسرز کے خلاف گھیرا تنگ کرنے کی تیاریاں شروع ہوگئیں جبکہ ہندوستانی کرکٹ بورڈ بی سی سی آئی کے سابق صدر انوراگ ٹھاکر نے کھیل میں کرپشن کی روک تھام کیلئے بل پارلیمنٹ میں پیش کردیا۔ہندوستانی کرکٹ بورڈ کے صدر اور حکمران جماعت کے رہنما انوراگ ٹھاکر نے ایک پرائیویٹ ممبر بل پارلیمنٹ میں جمع کرایا ہے جس میں انھوں نے میچ فکسنگ میں ملوث شخص کو 10 برس کےلئے جیل میں ڈالنے کی تجویز دی ہے۔ساتھ میں فکسنگ کیلئے دی جانے والی رقم کا 5 گنا جرمانہ لگانے کی بھی سفارش کی گئی ہے۔ یہ بل موسم سرما کے پارلیمنٹ سیشن کے دوران پیش کیا جائے گا۔


انوراگ ٹھاکر نے یہ بھی مطالبہ کیا ہے کہ تمام اسپورٹس فیڈریشن کےلئے ایک مرکزی ایتھک کمیٹی بنائی جائے جہاں پر ڈوپنگ، میچ فکسنگ، عمر کے حوالے سے فراڈ، خواتین کو ہراساں کرنے سمیت تمام معاملات کا جائزہ لیا جائے۔ انھوں نے یہ تجویز بھی پیش کی کہ اس کمیٹی کو سول کورٹ جتنے اختیارات حاصل ہونا چاہئیں۔ اس کمیٹی کے ممبران کی تعداد 6 ہو جن میں سے 4 سپریم یا پھر ہائیکورٹ کے ریٹائرڈ ججز ہونا چاہئیں، ساتھ میں انھوں نے کمیٹی ممبران کےلئے چیف جسٹس سے مشاورت کی بھی تجویز دی۔