شہری ٹریفک بلاک کرنیوالوں کی اطلاع پولیس کو دیں، ترجمان وزیر اعلیٰ پنجاب

شہری ٹریفک بلاک کرنیوالوں کی اطلاع پولیس کو دیں، ترجمان وزیر اعلیٰ پنجاب
صوبے بھر میں تمام شاہراؤں پر ٹریفک معمول کے مطابق چل رہی ہے، ترجمان وزیر اعلیٰ پنجاب۔۔۔۔۔۔فائل فوٹو

لاہور: لاہور میں تحریک لبیک کے سربراہ علامہ خادم حسین رضوی سمیت 50 کے قریب کارکنوں جبکہ پشاور میں 35 افراد کو حرسات میں لیا گیا ہے۔وزیر اعلیٰ پنجاب کے ترجمان شہباز گل کا کہنا ہے کہ کسی کو امن و امان کی صورت حال خراب کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ شہری کسی بھی جگہ ٹریفک بلاک کرنے والوں کی اطلاع پولیس کو دیں۔


وزیر اعلیٰ پنجاب کے ترجمان شہباز گل کا مزید کہنا ہے کہ سڑکیں بلاک کرنے والے مظاہرین کو بڑی تعداد میں گرفتار کر لیا گیا ہے جبکہ صوبے بھر میں تمام شاہراؤں پر ٹریفک معمول کے مطابق چل رہی ہے۔

جمعے اور ہفتے کی درمیانی رات پولیس نے لاہور میں ملتان روڈ پر تحریکِ لبیک کے سربراہ علامہ خادم حسین رضوی کی رہائش گاہ پر کارروائی کی اور انہیں حراست میں لیا تو گرینڈ بیٹری اسٹاپ پر ٹی ایل پی کے کارکنوں نے پولیس پر پتھراؤ شروع کر دیا جس سے ایک پولیس آفیسر زخمی ہو گیا۔

مظاہرین نےایس پی اقبال ٹاؤن سید علی کو ایک گھنٹے تک یرغمال بنائے رکھا تاہم پولیس نے آنسو گیس شیلنگ کر کے انہیں بازیاب کرایا۔

پولیس کے مطابق مظاہرین نے متعدد گاڑیوں کو بھی نقصان پہنچایا اور مظاہرین سے نمٹنے کے لیے واٹر کینن بھی موقع پر موجود رہی۔ پولیس نے 50 کے قریب کارکنوں کو گرفتار کر کے ڈھائی گھنٹے بعد علاقہ کلیئر کر دیا۔

ادھر پشاور میں پولیس نے مختلف علاقوں میں کارروائی کرتے ہوئے تحریک لبیک کے 35 کارکنوں کو حراست میں لیا ہے۔

پولیس کے مطابق تھانہ گلبرگ اور تھانہ غربی پولیس نے مشترکہ کارروائی کے دوران عزت خان چوک گلبرگ سے تحریک لبیک کے رہنما شکیل عمرزئی کو حراست میں لیا۔

خاندانی ذرائع نے بھی شکیل عمرزئی کی گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ پولیس شکیل عمر زئی کو موبائل گاڑی میں ساتھ بٹھا کر لے گئی۔پشاور شہر کے دیگر علاقوں میں بھی پولیس نے کارروائی کر کے 35 کارکنوں کو گرفتار کیا ہے۔