وبا کی دوسری لہر انتہائی خطر ناک ثابت ہو سکتی، اسد عمر

Pakistan,Asad umer,Covid-19,Government
فائل فوٹو

اسلام آباد: وفاقی وزیر اسد عمر نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ وبا کی دوسری لہر انتہائی خطر ناک ثابت ہو سکتی ہے کیونکہ دیگر ممالک میں بھی وبا کی دوسری لہر کی شدت زیادہ ہے کیونکہ اس وقت ملک میں لوگوں کے رویوں سے لگ رہا انہیں وبا کی شدت کا احساس نہیں.

ان کا مزید کہنا تھا کہ اسکولز بند کرنے کا فیصلہ آسان نہیں تھا اور 11 جنوری 2021 سے حالات دیکھ کر اسکولز کھلنے کا امکان ہے جبکہ ریسٹورنٹس میں کھانے پینے پر پابندی لگا دی ہے اور بند کمروں والے ریسٹورنٹس کو بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ وبا کی پہلی لہر میں مسلم ممالک نے مساجد بند کر دی تھیں لیکن ہم نے ایسا نہیں کیا تھاجبکہ ہم نے شروع میں لاک ڈاؤن کیا تو سب سے زیادہ غریب طبقہ متاثر ہوا تھا اور حکومت اب ایسے حالات نہیں چاہتی جس سے روزگار اور زندگیوں کو خطرہ ہو۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ وفاقی حکومت نے احساس پروگرام کا دوسرا فیز شروع کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے اور وبا سے متعلق پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس کل بلایا ہے اور اجلاس میں سیاسی قائدین کو بھی مدعو کیا گیا ہے۔ ضرورت اس بات کی بھی ہے کہ سیاستدانوں کو موجودہ صورتحال میں سنجیدگی کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔

واضح رہے کہ وبا کی دوسری لہر شدت اختیار کرنے لگی ہے۔ سندھ میں آج سے کاروبار چھ بجے تک بند کرنے کے احکامات جاری کیے گئے ہیں۔ کاروبار کے اوقات کار صبح چھ بجے سے شام چھ بجے تک ہونگے۔

محکمہ داخلہ سندھ کے احکامات کے مطابق تمام تجارتی مراکز جمعہ اور اتوار کو مکمل بند رہیں گے صرف جمعہ اور اتوار کو اشیا ضروریہ کی دکانیں کھلیں گی۔ محکمہ داخلہ کی جانب سے نئی پابندیاں اکتیس جنوری 2021 تک لاگو رہیں گی۔