آزادی مارچ سے متعلق فضل الرحمن کا حتمی فیصلہ سامنے آگیا

آزادی مارچ سے متعلق فضل الرحمن کا حتمی فیصلہ سامنے آگیا

سکھر :جمعیت علماءاسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ آزادی مارچ کی تاریخ میں تبدیلی کا کوئی امکان نہیں ہے ،موجودہ حکمرانوں کو حق حکمرانی کا کوئی حق نہیں ہے، حکمرانوں نے کشمیریوں کا سودا کر کے امتحان میں ڈال دیا ہے۔


سکھر میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ جمعہ کو رہبر کمیٹی حکومتی مذاکراتی سے ملاقات کرے گی جبکہ 31اکتوبر کو شیڈول کے مطابق آزادی مارچ اسلام آباد میں داخل ہو گا، تاریخ میں کوئی ردوبدل کا کوئی امکان نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ 27اکتوبر کو پورے ملک میں جے یو آئی کشمیریوں سے یکجہتی میں شریک ہو گی، موجودہ حکمرانوں نے کشمیریوں کا سودا کر کے ملک کو ایک امتحان میں ڈال دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومتی ٹیم کا لہجہ مذاکرات کا نہیں تھا لیکن رہبر کمیٹی نے مذاکرات سے انکار نہیں کیا جبکہ کراچی میں بڑا جلسہ ہو گا اور 31اکتوبر کو قافلہ اسلام آباد میں داخل ہو گا۔ فضل الرحمان نے کہا کہ موجودہ حکومت کو حق حکمرانی حاصل نہیں ہے جبکہ آزادی مارچ کے حوالے سے مستقبل کے فیصلے رہبر کمیٹی کے فیصلے کی روشنی میں بنائیں گے جہاں پر تمام اپوزیشن جماعتیں، رہبر کمیٹی میں مشاورت سے حکومتی کمیٹی کو جواب دے گی۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن میں دھاندلی کی تحقیقات کےلئے پارلیمنٹ میں کمیٹی بنائی گئی تھی جبکہ اس کمیٹی کے ٹی او آرز تک نہیں بنائے گئے۔ فضل الرحمان نے کہا کہ عوام کو آزادی مارچ سے امید ہے جس میں تمام طبقات شرکت کررہے ہیں۔