اسلام آباد ہائیکورٹ نے ارشد شریف کی موت کی رپورٹ طلب کر لی

اسلام آباد ہائیکورٹ نے ارشد شریف کی موت کی رپورٹ طلب کر لی

اسلام آباد: عدالت عالیہ نے کینیا میں قتل ہونے والے صحافی ارشد شریف کی موت کی رپورٹ کل تک طلب کرتے ہوئے سیکرٹری داخلہ اور سیکرٹری خارجہ کو نوٹس جاری کر دیا۔ 

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے صحافی ارشد شریف کے قتل کے معاملے پر تحقیقات کیلئے دائر درخواست پر سماعت کی جس دوران انہوں نے استفسار کیا کہ ارشد کی باڈی کہاں ہے؟

درخواست گزار کے وکیل بیرسٹر شعیب رزاق نے عدالت کو بتایا کہ ارشد شریف کی میت نیروبی میں ہے۔ انہوں نے استدعا کی کہ ارشد شریف کے قتل کی تحقیقات کیلئے جوڈیشل کمیشن بنایا جائے جس پر اسلام آباد ہائیکورٹ نے سیکرٹری داخلہ اور سیکرٹری خارجہ کو نوٹس جاری کر دیا۔

عدالت نے وزارت داخلہ اور وزارت خارجہ کے نامزد افسر کو ارشد شریف کی فیملی سے فوری ملاقات کی ہدایت کرتے ہوئے سیکرٹری داخلہ اور سیکرٹری خارجہ کو ارشد شریف کی فیملی سے فوری رابطہ کرنے کا حکم دیا جبکہ ارشد شریف کی ڈیڈ باڈی واپس لانے کے اقدامات اٹھانے کی بھی ہدایت جاری کر دی۔ 

واضح رہے کہ درخواست میں موقف اختیار گیا تھا کہ کمیشن بنا کر تحقیقات کروائی جائیں کہ ارشد شریف کن حالات میں باہر گئے، سیکیورٹی ایجنسیز کو کینیا کی ایجنسیز سے رابطہ کر کے تحقیقات کا حکم دیا جائے جبکہ ارشد شریف کی میت پاکستان لانے کیلئے اقدامات کا حکم دیا جائے۔

مصنف کے بارے میں