نیویارک : پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں بھارتی وزیر خارجہ سشماسوراج کوکرارا جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت جنوب ایشیا میں دہشت گردی کی ماں ہے۔ڈاکٹرملیحہ لودھی نے جنرل اسمبلی میںخطاب کرتے ہوئے کہاکہ قائداعظم پر تنقیدکرنے والوں کے ہاتھ گجرات میں مسلمانوں کے خون سے رنگے ہیں اور بھارت میں کوئی بھی اقلیت محفوظ نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ کشمیر بھارت کاحصہ نہیں ہے اس پر بھارتی قبضہ غیر قانونی ہے جبکہ بھارت کا حکمران گجرات میں مسلمانوں کے قتل عام میں ملوث رہا ہے۔ملیحہ لودھی نے بھارت کو جنوبی ایشیامیں دہشت گردی کاسرپرست اعلیٰ قرار دیتے ہوئے کہا کہ بھارت دہشت گردی کوریاستی ہتھکنڈے کے طور پر استعمال کرتا ہے۔

انہوںنے کہاکہ پاکستان تمام مسائل کاحل مذاکرات سے چاہتا ہے لیکن مذاکرات کےلئے بھارت کو دہشت گردی کی پالیسی ترک کرنا ہوگی۔ملیحہ لودھی نے بتایا کہ پاکستان کےخلاف بھارت بہتان تراشی پراترآیاہے۔کلبھوشن یادیو سے متعلق بات کرتے ہوئے انہوںنے کہاکہ اس نے بھارت کی جانب سے پاکستان کے اندر جاسوسی کرنے کا اعتراف کیا ہے۔

انہوں نے عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ بھارت کو سیز فائر کی خلاف ورزی سے روکے۔ان کاکہنا تھا کہ اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عمل سے بھارت کا انکار دھوکا اور جارحیت ہے۔