تہران: ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے کہا ہے کہ سلامتی کونسل کی قراردادیں نہ تو سب کچھ ہیں اور نہ ہی انہیں محض کاغذ کا ایک ٹکڑا قرار دیا جاسکتا ہے۔

شمالی کوریا کے معاملے پر سلامتی کونسل کے اجلاس کی طرز پرمنعقدہ ایک تعلیمی ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ سلامتی کونسل کی قراردادیں سب کچھ نہیں محض کاغذ کا ٹکڑا ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ دنیا میں فوجی طاقت ہی فیصلہ کن نہیں طاقت کے دوسرے ذرائع بھی موجود ہیں جن کے ذریعے قومی مفادات کا تحفظ کیا جاسکتا ہے۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ دنیا اور عالمی تعلقات میں مغرب پر انحصار کا دور بھی اب ختم ہوچکا ہے۔ محمد جواد ظریف نے واضح کیا کہ جارج بش کے دور میں امریکا نے نئے عالمی نظام کا دعوی کیا تھا جس کے لیے بھاری مادی اور غیر مادی اخراجات بھی برداشت کیے گئے لیکن مشرقی ایشیا، شام، عراق اور افغانستان میں تشدد اور بدامنی کے سوا اس کا کوئی نتیجہ برآمد نہیں ہوا۔

مصنف کے بارے میں