وزیراعظم کے نریندر مودی کے حق میں بیان پر بہت نقصان ہوا:بلاول بھٹو

وزیراعظم کے نریندر مودی کے حق میں بیان پر بہت نقصان ہوا:بلاول بھٹو

گلگت:پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ مذاکرات کے دروازے ہمیشہ کھلے رہنے چاہئیں۔


تفصیلات کے مطابق

سکردو میں خطاب کرتے ہوئے کشمیر کے معاملے پر بلاول کا کہنا تھا کہ ہمیں بار بار اقوام متحدہ کا دروازہ کھٹکھٹانا چاہیے اور بھارت کی انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کو دنیا کے سامنے لانا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت بالکل ناکام اور نااہل ہے، اگر حکومت بھی حزب اختلاف کا کردار کررہی ہے تو حکمرانی کون کرےگا؟ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں وزارت خارجہ کو ناکام بنایا گیا جبکہ سفارت کاری جاننے والی شخصیات کو پیچھے چھوڑ دیا گیا۔چیئرمین پی پی پی کا کہنا تھا کہ بھارتی انتخابات کے دوران پاکستان کے پاس بیانیہ تبدیل کرنےکاموقع تھا۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کے نریندر مودی کے حق میں بیان پر بہت نقصان ہوا۔بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ ’سلیکٹڈ‘ وزیراعظم مسئلہ کشمیر پر موثر انداز میں آواز نہیں اٹھا سکتا۔

چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ حکومت اپوزیشن کو دیوار سے لگانے کی کوشش کررہی ہے۔ پیپلزپارٹی کی مسلسل جدوجہد کی تاریخ ہے،ہم نے آہستہ آہستہ اپنے حقوق حاصل کیے ہیں، صدر زرداری نے گلگت بلتستان میں حکومت بنائی۔ ان کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی نے عوام سے کیا ہر وعدہ پورا کیا ہے، پیپلزپارٹی فاشسٹ نہیں نظریاتی جماعت ہے، مجھے افسوس ہے کسی نے پیپلزپارٹی کا منشور نہیں پڑھا۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ عمران خان نے خود کو پورے ملک کے سامنے بے نقاب کر دیا،عمران خان اپنی کہی ایک بھی بات پر قائم نہیں رہے، پی ٹی آئی حکومت بالکل ناکام اور نااہل ہے، حکومت بھی اپوزیشن کا کردار کررہی ہے تاہم حکومت اپوزیشن کرے گی تو حکمرانی کون کرےگا۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ حکومت اپوزیشن کو دیوار سے لگانے کی کوشش کررہی ہے، مشترکہ پارلیمنٹ کے اجلاس کے دوران مریم نواز کو گرفتارکرلیا گیا، حکومت کو پتہ ہی نہیں اسے کیا کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ جس روز میں آزاد کشمیر پہنچا اسی رات فریال تالپورکو گرفتار کرلیا گیا، ہم نے رکاوٹیں ماضی میں بھی دیکھی ہیں، پتاہے ان کا مقابلہ کیسے کرنا ہے۔چیئرمین پیپلزپارٹی کا کہنا تھا کہ دنیا میں جہاں جہاں جاؤں گا کشمیر کے لیے آواز بلند کروں گا، کشمیرکاز کے لئے جگہ جگہ آواز بلند کریں گے، پاکستان نے کبھی آرٹیکل 370 کو تسلیم نہیں کیا، مقبوضہ کشمیرکو کھلی جیل بنا دیا گیا ہے، مقبوضہ کشمیرمیں بھارت کے لیے کام کرنے والے سیاستدانوں کو بھی نظر بند کردیا گیا، اگر کشمیری مودی کے ساتھ ہیں تو وہاں سے کرفیوہٹا دیا جائے۔