ن لیگی رکن قومی اسمبلی افضل ندیم کھوکھو سپریم کورٹ لاہور رجسٹری سے گرفتار

ن لیگی رکن قومی اسمبلی افضل ندیم کھوکھو سپریم کورٹ لاہور رجسٹری سے گرفتار
فائل فوٹو

لاہور:ن لیگی رکن قومی اسمبلی افضل ندیم کھوکھرکو سپریم کورٹ لاہور رجسٹری سے گرفتارکرلیا گیا۔


تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں کھوکھر برادران کے معاملے پر کیس کی سماعت ہوئی اور افضل ندیم کھوکھر کے خلاف شہری کی اراضی پر قبضے کا مقدمہ کے اندراج کے باعث رکن اسمبلی کو گرفتار کیاگیا۔

پولیس کے مطابق تھانانواب ٹاؤن میں قبضے کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کیا گیا اوریہ مقدمہ برطانیہ میں مقیم محمد علی ظفر کی مدعیت میں درج کیا گیا۔ایف آئی آر کے مطابق کئی سال قبل طارق محمود سے 34 مرلہ زمین خریدی تھی،اب اس جگہ پر افضل کھوکھر کی رہائشگاہ کھوکھر پیلس بن چکا ہے،لندن میں مقیم ہونے پرکیس لڑنے کیلئے مختارعام فیض احمد کو دے رہا ہوں جبکہ عدالت نے شفیع کھوکھر کو ڈی جی اینٹی کرپشن کے حوالے کرتے ہوئے حکم دیا کہ دو گھنٹے میں اس کا بائیو ڈیٹا تیار کرکے پیش کیا جائے۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے کیس کی سماعت کی اور اس موقع پرایل ڈی اے افسر نے عدالت کو بتایا کہ کھوکھر برادران کی ایل ڈی اے اراضی پر تعمیر مارکیٹ کا آپریشن کرنیوالے تمام افسران معطل کر دیے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ افسران اور پٹواری جہاں بھی تعینات ہیں ان کا پتا چلایا جائے،سب ملے ہوئے تھے، غریب اور مسکینوں کو جائیداد وں سے محروم کیا گیا،یہ اتنے طاقتور لوگ ہیں کہ جو ان کے خلاف بات کرے انہیں مروا دیتے ہیں،جب 1977 میں اشتمال کردیا گیا تو پھر اسے تبدیل نہیں کیا جاسکتا،یہ طاقتور لوگ تھے اس لیے 2013 میں دوبارہ غیر قانونی اشتمال کرایا۔

جسٹس میاں ثاقب نثار نے مزید ریمارکس دیئے کہ مسکین، غریب لوگوں کو جائیداد سے محروم کرنے والے افسران کو نہیں چھوڑیں گے،شفیع کھوکھر تم علاقے کے منصف بنے ہوئے ہو اور کرتے قبضے ہو۔چیف جسٹس نے حکم دیا کہ ان تمام افسران ، پٹواریوں، قانون گو تحصیلدار کی رپورٹ پیش کریں،کھوکھر برادران کے رقبے کا اشتمال کرنے والے افسران اب کہاں تعینات ہیں،یہ کمیٹیاں سالہاسال کام کرتی رہیں گی،ہمیں حتمی رپورٹ درکار ہے۔

چیف جسٹس پاکستان نے قائداعظم کی سالگرہ پر ریمارکس دیئے کہ ہم 25 دسمبر منالیتے ہیں اور گھر بیٹھ جاتے ہیں،قائداعظم نے کہا تھا کام، کام اور بس کام،ہم آج کام کرکے قائداعظم کو خراج عقیدت پیش کررہے ہیں،وزرا کو بلالیں، یہاں کام کریں،قائداعظم ڈے کی چھٹی نہ منائیں،نہروسمیت دیگرسیاسی لیڈرمیرے قائدکے قریب بھی نہیں پھٹک سکتے،جنہوں نے اپنی زندگی پرکھیل کرملک بنایا،ہم انکی یادچھٹی کرکے مناتے ہیں۔