تحریک انصاف کا این اے 75 میں دوبارہ الیکشن کے فیصلے کیخلاف اپیل کرنے کا فیصلہ

تحریک انصاف کا این اے 75 میں دوبارہ الیکشن کے فیصلے کیخلاف اپیل کرنے کا فیصلہ
کیپشن:   تحریک انصاف کا این اے 75 میں دوبارہ الیکشن کے فیصلے کیخلاف اپیل کرنے کا فیصلہ سورس:   فائل فوٹو

اسلام آباد: این اے 75 ڈسکہ میں دوبارہ الیکشن کرانے کے الیکشن کمیشن کے فیصلے کیخلاف حکومت نے اپیل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ الیکشن کمیشن نے این اے 75  کے ضمنی الیکشن کو کالعدم قرار دیتے ہوئے وہاں 18 مارچ کو دوبارہ الیکشن کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔

اس حوالے سے وزیراعلیٰ پنجاب کی معاون خصوصی فردوس عاشق اعوان نے کہا تھا کہ ہم الیکشن کمیشن کے فیصلے کا احترام کرتے ہیں تاہم  قانونی چارہ جوئی پی ٹی آئی کا حق ہے اور اپیل کا فیصلہ پارٹی مشاورت سے کیا جائے گا۔

خیال رہے کہ الیکشن کمیشن نے این اے 75 ڈسکہ کے ضمنی انتخابات کو کالعدم قرار دیتے ہوئے پورے حلقے میں اب 18 مارچ کو الیکشن دوبارہ ہو گا ۔ الیکشن کمیشن نے حکم دیا ہےکہ حلقے میں الیکشن کے لیے سازگار ماحول نہیں تھا جس کے بعد الیکشن کو کالعدم قرار دیا جاتا ہے۔

رہنما مسلم لیگ ن محمد زبیر کا کہنا تھا کہ دھاندلی کے حربوں کو دیکھتے ہوئے الیکشن کمیشن بھی اس دفعہ حیران و پریشان رہ گیا تھا ،این اے 75 میں گولیاں چلتی رہیں ایسی فضا پیدا ہو گئی کہ لوگوں کیلئے ووٹ ڈالنا مشکل ہو گیا تھا ،محمد زبیر نے کہا کہ عمران خان کے خلاف فیصلہ آنا چاہیے تھا ،مسلم لیگ ن نے اب دھاندلی کا راستہ روک دیا ہے ،الیکشن کمیشن کا فیصلہ تاریخ میں لکھا جائے گا ۔