ٹرمپ ہمارے داخلی معاملات میں ٹانگ نہ اڑائے، چین نے کھلی دھمکی دیدی

ٹرمپ ہمارے داخلی معاملات میں ٹانگ نہ اڑائے، چین نے کھلی دھمکی دیدی

بیجنگ: چین نے کہا ہے کہ امریکہ جنوبی بحیرہ چین کے مسئلے میں فریق نہیں، بحیرہجنوبی ناقابلِ تردید طور پرچین کا حصہ ہے، امریکہ خطے کو متنازعہ قرار دے کر دخل اندازی سے باز رہے، تمام متعلقہ ممالک سے پرامن بات چیت کرنے پر قائم ہیں ، ہماری پوزیشن واضح اور تمام اقدامات قانونی ہیں۔


چائنہ ریڈیو انٹرنیشنل کے مطابق چینی وزارتِ خارجہ نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ جنوبی بحیرہ چین کے مسئلے میں فریق نہیں ہیہم اس تنازع میں تمام متعلقہ ممالک سے پرامن بات چیت کرنے پر قائم ہے اور بین الاقوامی سمندر میں جہاز رانی اور پروازوں کی آزادانہ نقل و حرکت کے اصولوں کا احترام کرتے ہیں ۔انہوں نے کہا ہے کہ ہماریجنوبی بحیرہ چین کے مسئلے پر پوزیشن واضح ہے اور ہمارے اقدامات قانونی ہیں خیال رہے موجودہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے چین کے بارے میں سخت موقف اپنایا ہے اور وائٹ ہاس کے ترجمان شون سپائسر نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ وہ جزائر جو حقیقت میں بین الاقوامی پانیوں میں ہیں اور چین کا باقاعدہ حصہ نہیں ہیں، ہم وہاں بین الاقوامی مفادات کے تحفظ کو یقینی بنائیں گے اور چین سمیت کسی دوسرے ملک کو لینے سے روکیں گے۔اس سے پہلے سابق امریکی صدر اوباما نے بحیرہ جنوبی چین کے تنازع سے خود کو دور رکھا تھا تاہم اس نے گذشتہ برس وہاں اپنا جنگی بحری جہاز اور بی 52 بمبار جہاز بھیجا تھا۔