اسرائیل نے یاسر عرفات کو قتل کرنے کی بے پناہ کوشش کی، رپورٹ

اسرائیل نے یاسر عرفات کو قتل کرنے کی بے پناہ کوشش کی، رپورٹ

نیو یارک: نیو یارک ٹائمز نے اپنی رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ سابق اسرائیلی وزیراعظم ایریئل شیرون سابق فلسیطینی صدر یاسر عرفات کو قتل کرانے کے لیے بے چین تھے اور انہوں نے فلسطینی لبریشن آرگنائزیشن کے سربراہ کو قتل کرنے کے لئے کئی منصوبے بھی بنوائے تھے۔


نیویارک ٹائمز کے مطابق اسرائیلی صحافی رینون برگمین نے سابق فلسطینی صدر کی موت کے کئی سالوں بعد اپنی کتاب میں انکشاف کیا ہے کہ اسرائیلی حکام کی جانب سے یاسر عرفات کے جہاز کو غرق کروانے کا منصوبہ بھی بنایا گیا تھا جبکہ یاسرعرفات کو قتل کرنے کے بعض منصوبے تو بالکل فلمی سین کی طرح تھے۔ کتاب کے مطابق ایتھنز ایئرپورٹ پر اسرائیلی انٹیلی جنس اہلکار یاسر عرفات کے منتظر تھے۔

ایک مرتبہ ایف 16 نے بوئنگ 707 کے قریب پہنچ کر مواصلات میں خلل ڈالا۔ یہ دعویٰ بھی کیا گیا ہے کہ ایف 16 طیاروں نے 5 دفعہ مختلف مسافر طیاروں کی جانب اڑان بھری۔ جنگی طیاروں کو یاسر عرفات کا مسافر طیارہ تباہ کرنے کا ٹاسک دیا گیا تھا۔ جنگی طیارے نومبر 1982 سے جنوری 1983 تک اسٹینڈ بائی رکھے گئے تھے۔ اسرائیل نے یاسر عرفات کے قتل کیلئے 4 ایف 16 طیارے تیار رکھے تھے۔

کتاب میں مصنف نے کہا ہے کہ اسرائیل سمجھتا تھا کہ عرفات کا خاتمہ فلسطینی ریاست کا خاتمہ ہو گا۔ یاسرعرفات کو انٹرویو کے دوران صحافی سمیت مارنے کا فیصلہ بھی کیا گیا تھا۔ یاد رہے کہ پیرس کے ایک اسپتال میں زیرعلاج یاسر عرفات گیارہ نومبر 2004 کو نامعلوم بیماری کے باعث 75 سال کی عمر میں انتقال کر گئے تھے اور ان کی موت کو مشکوک قرار دیا گیا تھا جبکہ اس کی تحقیقات اب بھی کی جا رہی ہے۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں