کچھ ایشوز پر پارٹی کو چھوڑ کر قومی سوچ اپنانی چاہیے، چودھری نثار

 کچھ ایشوز پر پارٹی کو چھوڑ کر قومی سوچ اپنانی چاہیے، چودھری نثار

اسلام آباد: سابق وزیر داخلہ چوہدری نثارعلی خان نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ افسوس ہے کہ گزشتہ روز میری باتوں کو توڑ مروڑ کر پیش کیا گیا۔ میڈیا کی جانب سے یہ کہا گیا کہ میں نے حکومت کو چھوڑ کر اپوزیشن کا ساتھ دیا۔ پریس گیلری میں پارلیمنٹ سے کیا صرف دنگا فساد ہی کور کیا جاتا ہے۔ کیا کوئی سنجیدہ بات نہیں ہو سکتی اس ایوان کی بے توقیری ہم سب نے کی ہے۔


ان کا مزید کہنا تھا کہ لعنت جیسے الفاظ یہاں ادا ہوتے ہیں کیا ان کی تشہیر ضروری ہے۔ ہر چیز میں منفی پہلو کی رپورٹنگ ہو گی تو یہ مناسب نہیں ہو گا۔ شیریں مزاری نے اچھی بات کی میں نے اس بات کی حمایت کر کے کوئی گناہ تو نہیں کیا اور کچھ ایشوز پر پارٹی کو چھوڑ کر قومی سوچ اپنانی چاہئے۔

چوہدری نثار نے کہا کہ ’’ویزا آن ارائیول‘‘ قومی سلامتی کا مسئلہ ہے اس پر بحث ہونی چاہیے تھی کیونکہ میں نے ساڑھے چار سال کسی ایک شخص کو بھی ’’ویزا آن ارائیول‘‘ نہیں دیا۔ میرا موقف تھا کہ حکومتیں این جی اوز کی حمایت کیوں کر رہی ہیں اور میں نے نیک دلی سے کوشش کی کہ یہ مسئلہ عوام کے سامنے رکھوں اور جب دنیا آپ کو دیوار سے لگائے تو ہمیں ایک پیج پر آنا چاہیے۔

نیو نیوز کی براہ راست نشریات، پروگرامز اور تازہ ترین اپ ڈیٹس کیلئے ہماری ایپ ڈاؤن لوڈ کریں