زینب کے قاتل کو پولیس نے گرفتار نہیں کیا ، وکیل زینب

زینب کے قاتل کو پولیس نے گرفتار نہیں کیا ، وکیل زینب

قصور : قصور میں زیادتی کے بعد قتل ہونے والی ننھی پری زینب کا قاتل اس وقت سلاخوں کے پیچھے ہے ۔7 سالہ زینب کو قتل کرنے والا ملزم عمران اپنا جرم قبول کر چکا ہے ۔ ملزم عمران نے یہ بھی قبول کیا ہے کہ اس نے زینب کے علاوہ بھی 8 بچیوں کو اپنی ہوس کا نشانہ بنایا اور اس کے بعد انہیں قتل کر دیا۔ 


زینب کے قاتل کی گرفتاری کے بعد پورا ملک اور میڈیا اسے ملکی اداروں اور پولیس کا کارنامہ کہہ رہا ہے لیکن حقیقت اس کے برعکس دکھائی دے رہی  ہے ۔ امین انصاری کے وکیل آفتاب باجوہ ایڈووکیٹ نے دعویٰ کیا کہ ملزم عمران کو کسی قانون نافذ کرنے والے ادارے نے نہیں بلکہ عزیز و اقارب نے پکڑ کر پولیس نے دیا۔ زینب کے رشتہ دار اسی ملزم کی نشاندہی پہلے بھی کرتے رہے ہیں لیکن کسی نے نوٹس نہیں لیا۔

انہوں نے شہباز شریف کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ زینب کا قاتل گرفتار ہونے پر تو شہباز شریف کریڈٹ لینے آگئے لیکن جب قصور کے اندر 2 لاشیں گریں اس وقت وزیر اعلیٰ کہاں تھے اور ان کے قاتلوں کو کون گرفتار کرے گا۔