پاکستان سے دورے کی دعوت ملی تو قبول کریں گے، ترجمان افغان طالبان

پاکستان سے دورے کی دعوت ملی تو قبول کریں گے، ترجمان افغان طالبان
پاکستان کی طرف سے رسمی دعوت ملتی ہے تو وہ جائیں گے، ترجمان افغان طالبان۔۔۔۔۔۔فوٹو/ بشکریہ الجزیرہ ڈاٹ کام

دوحہ: افغان طالبان نے کہا ہے اگر پاکستان انہیں دورے کی دعوت دیتا ہے تو وہ ضرور جائیں گے اور وزیر اعظم عمران خان سے بھی ملیں گے۔افغان طالبان کے ترجمان سہیل شاہین نے برطانوی میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ خطے اور ہمسایہ ممالک کے دورے کرتے رہتے ہیں اگر انہیں پاکستان کی طرف سے رسمی دعوت ملتی ہے تو وہ جائیں گے ۔ پاکستان بھی ہمارا ہمسایہ اور مسلمان ملک ہے۔


انہوں نے وزیراعظم عمران خان کی طرف سے 2016 میں کابل سے اغوا کیے گئے دو غیر ملکیوں کی رہائی سے متعلق بیان کو بھی سراہا۔

پاکستان کے آلہ کار ہونے سے متعلق الزام کے جواب میں سہیل شاہین نے کہا کہ جن لوگوں کے پاس طالبان کے خلاف جھگڑے کے لیے کوئی اور دلیل نہیں وہی ہم پر ایسے الزامات لگاتے ہیں، ہمارے اسلامی اور قومی مفاد ہیں جس میں ہم کسی کو بھی مداخلت نہیں کرنے دیتے، جہاں تک دوسرے ممالک اور ہمسایہ ممالک کے ساتھ رابطے قائم کرنے کا سلسلہ ہے، اُن کے ساتھ تو ہمارے رابطے ہیں بھی اور ہم چاہتے بھی ہیں۔