نیو یارک: امریکی خلائی ایجنسی ”ناسا“ نے اعلان کیا ہے کہ اس کے دو خلاباز جن میں ایک کا تعلق امریکہ اور دوسرے کا فرانس سے ہے زمین کے مدار میں موجود خلائی اسٹیشن سے باہر نکل کر چھ گھنٹوں تک خلا میں تیرتے رہے تاکہ اسٹیشن کی مطلوبہ دیکھ بھال اور مرمت کا کام کر سکیں۔

امریکی خلائی ایجنسی ناسا کے مطابق یہ مشن امریکی خلاباز شائن کیمبروگ اور ان کے ساتھی ٹوما باسکے سر انجام دے رہے ہیں۔ دونوں افراد گرینچ کے وقت کے مطابق 12 بجے خلائی اسٹیشن سے باہر آئے اور چھ گھنٹوں تک اپنے کام میں مصروف رہے۔ دونوں خلابازوں نے اسٹیشن پر نئے لانچر کی تنصیب کی تاکہ انسانوں کو لانے والی خلائی گاڑیاں اسٹیشن سے متصل ہو سکیں۔

توقع ہے کہ آئندہ برس کے آغاز سے یہ سلسلہ بھی شروع ہو جائے گا۔ یہ خلائی گاڑیاں ہر 90 منٹ کے اندر زمین کے گرد ایک چکر پورا کریں گی۔ اس طرح اس میں موجود خلابازوں کے سامنے آفتاب کے طلوع اور غروب کا منظر کئی مرتبہ آئے گا۔ 1998 میں زمین کے مدار میں مذکورہ خلائی اسٹیشن کے پہنچنے کے بعد سے اسٹیشن کے باہر سر انجام دینے والا یہ مشن نمبر 169 ہے۔