گلگت میں انسانی خون پینے والا ڈریکولا گرفتار

گلگت میں انسانی خون پینے والا ڈریکولا گرفتار

گلگت:انسانی خون سے پیاس بجھانا کوئی نیاکھیل نہیں۔ گلگت میں ڈریکولا کے نام سے خوف وہراس پھیلانے والے شخص کوپولیس نے گرفتارکرلیا ہے۔بتایا جاتا ہے کہ یہ ذہنی مریض بچوں  کی گردن میں دانت گاڑھ کر خون پینے کی کوشش کر رہاتھا جبکہ جانوروں اور پرندوں کا کچا گوشت بھی چبا جاتا ہے ۔مقامی قبرستان میں ڈیرہ ڈالنے والا ڈریکولا لوگوں کو دیکھ کر غرغرانے لگتا۔ پولیس نے شہریوں کی درخواست پر اس ڈریکولا کو گرفتار کرلیا۔وہ ایسا کیوں کرتا تھا پولیس کی جانب سے تفتیش ابھی جاری ہے۔


اس سے پہلے بھکر کے نواحی دیہات میں مقیم تین بھائی عرصہ دراز اس گھناونے فعل میں ملوث رہے ۔ طبی ماہرین ایسے افراد کو نفسیاتی مریض قرار دیتے ہیں۔بھکر میں انسانی گوشت سے بھوک مٹانے والے تین درندے پکڑے گئے۔ اہل علاقہ کے مطابق تینوں سگے بھائی ہیں اورعرصہ دراز سے مردہ انسانوں کا گوشت کھانے کی لت میں مبتلا ہیں۔سمجھانے بجھانے پر بھی وہ باز نہ آئے تو لوگوں نے پولیس کو خبر کر دی۔پولیس کے روبروتینوں بھائیوں نے اپنے گھناﺅنے فعل کا اعتراف کر لیاتھا۔

بعدازاں کیس کی تفتیش ہوئی اورمقدمہ چلا۔ عدالت میں ثابت ہو گیا کہ تینوں بھائی کسی نفسیاتی بیماری کا شکار ہیں۔اسلام آباد میں ماہر ڈاکٹروں کی زیرنگرانی ان کا علاج جاری ہے لیکن اہل علاقہ آج بھی خوف و ہراس کا شکار ہیں۔

ویڈیو دیکھیں

نیوویب ڈیسک< News Source