آکسفورڈ اور ڈینڈی یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے مشترکہ تحقیق کے بعد انکشاف کیا ہے کہ نسیاں کی کمزوری اور بڑی حد تک لرزے کی کیفیت پیدا کرنے والی بیماری الزائمر کے مریضوں کیلئے کھیرے کا استعمال بیحد مفید ہوسکتا ہے۔کھیرے سے یہ مصرف لینے کیلئے سائنسدان  کھیرے میں موجود رہنے والے ایک خاص قسم کے وائرس کو بروئے کار لائے۔

  یہ وائرس اکثر ہرے نظرآنے والے کھیرے پرگٹھلیوں کی شکل میں نمایاں ہوجاتے ہیں مگر یہی گٹھلیاں الزائمر کا علاج بن سکتی ہیں۔ کھیرے کی نئی افادیت جاننے کے بعد سائنسدانوں نے اس کی ویکسین بھی تیار کرلی ہے۔

دعویٰ کیا ہے کہ بہت جلد وہ کھیرے کو الرجی اور شریانوں کی تنگی جیسے دوسرے امراض سے نجات کیلئے بھی استعمال کرسکیں گے۔

مصنف کے بارے میں