چوہدری شوگر ملز کیس، مریم نواز اور یوسف عباس کو 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیجنے کا حکم

چوہدری شوگر ملز کیس، مریم نواز اور یوسف عباس کو 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیجنے کا حکم

لاہور: پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز اور ان کے کزن یوسف عباس کو چوہدری شوگر ملز کیس میں 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیجنے کا حکم دے دیا گیا ہے۔


تفصیلات کے مطابق عدالت نے نیب حکام کی جانب سے دونوں ملزمان کے جسمانی ریمانڈ میں توسیع کی درخواست کو مسترد کرتے ہوئے 9 اکتوبر کو انہیں دوبارہ پیش کرنے کا حکم جاری کیا ہے۔

احتساب عدالت کے منتظم جج چودھری امیر محمد خان کے روبرو ملزموں کو 7 روزہ جسمانی ریمانڈ ختم ہونے پر پیش کیا گیا۔نیب کی طرف سے سپیشل پراسکیوٹر حافظ اسد اللہ اعوان اور حارث قریشی پیش ہوئے جبکہ ملزمہ مریم نواز اور یوسف عباس کی طرف سے امجد پرویز ایڈووکیٹ عدالت میں پیش ہوئے۔

اس دوران نیب کی جانب سے ملزمہ مریم نواز اور یوسف عباس کے جسمانی میں مزید 15 روزہ توسیع کی استدعا کی گئی۔پراسکیوٹر نیب کی جانب سے عدالت میں موقف اپنایا گیا کہ دوران تفتیش مریم صفدر اور یوسف عباس کے خاندان کی جائیداد کی تقسیم کے معاہدے کا انکشاف ہوا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ چوہدری شوگر ملز کے 1 کروڑ 45 لاکھ 58 ہزار 96 شیئرز میاں نواز شریف، شہباز شریف، عباس شریف، بہن کوثر اور والدہ شمیم بیگم میں تقسیم ہوئے جبکہ ایس ای سی پی ریکارڈ کے مطابق 2008ءمیں 2 کروڑ 62 لاکھ شیئرز چودھری شوگر ملز کے تھے۔ان کا کہنا تھا کہ دوران تفتیش 1 کروڑ 16 لاکھ 96 ہزار شیئرز کا فرق آیا ہے،مذکورہ شیئرز شریف خاندان کے اثاثوں میں شامل نہیں تھے۔جبکہ 2008ءمیں مریم نواز کے اثاثے انکی آمدن سے مطابقت نہیں رکھتے۔

دوسری جانب مریم نواز اور انکے کزن کی احتساب عدالت پیشی کے موقع پر سیکیورٹی کے خصوصی انتظامات کئے گئے ہیں۔جوڈیشل کمپلیکس کے اطرف انے والے راستوں کو خاردار تاریں اور کنٹینرز لگا کر سیل کر دیا گیا ہے۔مریم نواز کی پیشی کے باعث خواتین پولیس اہلکاروں کی بھی بڑی تعداد احاطہ عدالت کے اندار اور باہر تعیانات کر دی گئی ہیں۔