نندی پور پاور پراجیکٹ ریفرنس، بابراعوان کی بریت کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

نندی پور پاور پراجیکٹ ریفرنس، بابراعوان کی بریت کی درخواست پر فیصلہ محفوظ
فریقین کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کیا جو 30 اپریل کو سنایا جائے گا۔۔۔۔۔فوٹو/ آفیشل فیس بُک اکاؤنٹ

اسلام آباد: احتساب عدالت نے نندی پور پاور پراجیکٹ ریفرنس میں تحریک انصاف کے رہنما بابر اعوان کی بریت کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا۔


احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے بابر اعوان کی بریت کی درخواست پر فریقین کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کیا جو 30 اپریل کو سنایا جائے گا۔

سماعت کے دوران پراسیکیوٹر نیب نے مؤقف اختیار کیا کہ مزید دلائل نہیں دینا چاہتا اور گزشتہ سماعت پر جو دلائل دیے وہ کافی ہیں۔

نیب کے مطابق پیپلز پارٹی کے دور حکومت میں وزراء کی ملی بھگت سے نندی پور پاور پراجیکٹ منصوبے میں 2 سال کی تاخیر ہونے سے قومی خزانے کو 27 ارب کا نقصان پہنچا تھا۔

مذکورہ کیس میں سابق وزیراعظم راجا پرویز اشرف، سابق وزیر قانون بابر اعوان، سابق سیکریٹری قانون مسعود چشتی، ریاض کیانی، سینئر جوائنٹ سیکریٹری ڈاکٹر ریاض محمود، سابق ریسرچ کنسلٹنٹ شمائلہ محمود اور سابق سیکریٹری شاہد رفیق پر فرد جرم عائد ہو چکی ہے۔

خیال رہے نیب ریفرنس میں عائد الزامات پر بابر اعوان وزیراعظم کے مشیر برائے پارلیمانی امور کے عہدے سے مستعفی ہو گئے تھے۔