ٹرمپ پاکستانی ڈاکٹرز کے ویزے بھی رد کر نے لگے

ٹرمپ پاکستانی ڈاکٹرز کے ویزے بھی رد کر نے لگے

واشنگٹن :امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اپنی دھمکیوں کے بعدپاکستان کیخلاف عملی اقدامات کا آغاز بھی کر چکے ہیں اور وہ اقدامات میں سے ایک یہ بھی ہے کہ بہت بڑی تعداد میں ایسے نوجوان پاکستانی ڈاکٹروں کی J-1 امریکی ویزے کی درخواستیں رد کی جا رہی ہیں۔


تفصیلات کے مطابق امریکہ غیر ملکی ڈاکٹروں پر بھاری انحصار کرتا ہے اور ایک اندازے کے مطابق امریکہ کے کل ڈاکٹروں میں سے ایک چوتھائی کا تعلق دیگر ممالک سے ہے، لیکن اس کے باوجود پاکستانی ڈاکٹروں کا امریکہ میں داخلہ روکا جا رہا ہے۔ پاکستانی ڈاکٹروں کو امریکی شعبہ صحت میں اہم مقام حاصل ہے لیکن ڈونلڈ ٹرمپ کے دور میں ان ڈاکٹروں کیلئے امریکہ کے دروازے بند ہونا شروع ہو گئے ہیں۔

قانونی ماہرین کا کہنا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی چھ مسلم ممالک پر لگائی جانے والی سفری پابندیوں کے ساتھ ہی پاکستانی ڈاکٹروں کی ویزے کی درخواستیں رد کرنے کا عمل شروع ہو گیا تھا۔

رپورٹ کے مطابق رواں سال اب تک چونتیس J-1ویزہ درخواستوں کے رد کئے جانے کی اطلاع موصول ہوچکی ہے۔ اس سے پہلے کبھی پاکستانی ڈاکٹروں کے ویزے اتنی بڑی تعداد میں رد نہیں کئے گئے۔ پاکستان کا شمار ان ممالک میں ہوتا ہے جہاں سے ڈاکٹروں کی بہت بڑی تعداد امریکہ جاتی ہے۔

خیال رہے کہ یہ بدسلوکی صرف پاکستانی ڈاکٹروں کے ساتھ کی جا رہی ہے، کسی بھی اور ملک کے ڈاکٹروں کو ایسی پابندیوں کا سامنا نہیں ہے۔