مریم نواز کی درخواستوں پر سماعت کرنے والا لاہور ہائی کورٹ کا بینچ تحلیل

مریم نواز کی درخواستوں پر سماعت کرنے والا لاہور ہائی کورٹ کا بینچ تحلیل

لاہور:سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز کی جانب سے دائر درخواستوں پر سماعت کرنے والا لاہور ہائی کورٹ کا بینچ تحلیل ہو گیا۔


مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے اپنا نام ای سی ایل سے نکلوانے اور 6 ہفتوں کے لیے بیرون ملک جانے کی اجازت کے لیے لاہور ہائیکورٹ میں دو درخواستیں دائر کر رکھی ہیں۔

مریم نواز کی درخواستوں پر آج سماعت ہونی تھی تاہم رہنما ن لیگ کی درخواستوں پر سماعت کرنے والا بینچ تحلیل ہو گیا ہے۔جسٹس علی باقر نجفی کی سربراہی میں قائم بینچ موسم سرما کی عدالتی تعطیلات کے باعث تحلیل ہوا۔

لاہور ہائیکورٹ نے گزشتہ سماعت کے دوران کہا تھا کہ حکومت کی جانب سے مریم نواز کا نام ای سی ایل سے نکالنے یا نہ نکالنے کے فیصلے کے بعد ہی کیس کی سماعت ہو گی۔

عدالت نے حکومت کو اس حوالے سے جلد فیصلہ کرنے کی ہدایت دیتے ہوئے 26 دسمبر تک سماعت ملتوی کر دی تھی۔دو روز قبل وزارت داخلہ کی ذیلی کمیٹی نے مریم نواز کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی مخالف کر دی تھی۔

واضح رہے کہ  مریم نواز کا نام ای سی ایل سے نکلوانے اور پاسپورٹ واپس کرنے کی درخواست پر سماعت لاہور ہائیکورٹ میں نہ ہوسکی۔

 سابق وزیراعظم میاں نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) سے نکلوانے کیلئے آج سماعت نہ ہوسکی،لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس علی باقر نجفی موسم سرما کی چھٹیوں پر ہیں جس کی وجہ سے ہائیکورٹ کے بننے والے دو رکنی بنچ میں مریم نواز کے کیس کو شامل نہیں کیا گیا۔

وکیل مریم نواز ایڈوکیٹ امجد پرویز نے کہا ہےکہ مریم نواز کے کیس کی جلد شنوائی کے لیے آج ہی درخواست دائر کریں گے۔واضح رہے حکومت نے گزشتہ کابینہ اجلاس میں مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی مخالفت کی تھی۔

یاد رہے وفاقی حکومت کی جانب سے اس ضمن میں فیصلہ نہ آنے پر لاہورہائی کورٹ نے گزشتہ سماعت آج تک کے لئے ملتوی کر دی تھی۔

دو روز قبل وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارات ہونے والے کابینہ کے اجلاس میں مریم نواز کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ(ای سی ایل) میں رکھنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔