کینسر کیخلاف جنگ میں پاکستانی شیف فاطمہ علی چل بسیں

کینسر کیخلاف جنگ میں پاکستانی شیف فاطمہ علی چل بسیں
فاطمہ فوڈ نیٹ ورک کا ٹی وی شو ’چوپڈ‘ جیتنے والی پہلی پاکستانی خاتون تھیں۔۔۔۔فائل فوٹو

نیو یارک: فاطمہ علی نے 18 سال کی عمر میں اپنا شیف بننے کا خواب پورا کرنے کیلئے نیو یارک کا رخ کیا اور کھانے بنانے کی تربیت دینے والے بین الاقوامی شہرت یافتہ انسٹیٹیوٹ سے تربیت حاصل کی۔


فاطمہ نے کھانا بنانے کے مختلف مقابلوں میں حصہ لیا اور وہ فوڈ نیٹ ورک کا ٹی وی شو ’چوپڈ‘ جیتنے والی پہلی پاکستانی خاتون تھیں۔

دو سال قبل ڈاکٹرز نے فاطمہ علی کو ہڈیوں کے کینسر کی تشخیص کی تھی جس کے بعد انہوں نے ہمت و بہادری سے کینسر کو شکست دی لیکن گزشتہ سال ایک بار پھر ان میں کینسر کی تشخیص کی گئی تھی۔

کینسر جیسے موذی مرض سے جنگ کرنے والی فاطمہ کو ڈاکٹرز نے ایک سال کی زندگی کی خبر سُنا کر ان پر بم گرا دیا تھا جس کے بعد بہادر و باہمت فاطمہ نے اپنی بقیہ زندگی بھرپور انداز میں گزارنے کی ٹھانی اور کئی ٹی وی شوز میں شرکت کی لیکن آج یہ باہمت و بہادر فاطمہ علی کینسر سے جنگ ہار کر دار فانی سے کوچ کر گئی ہیں۔ 

فاطمہ علی کے انتقال پر سوشل میڈیا صارفین نے دکھ و افسوس کا اظہار کیا ہے۔

 3