بھارت میں جمہوریت کے بجائے کالے قوانین کا نفاذ ہو رہا ہے، وزیر خارجہ

India is enforcing black laws instead of democracy, says Foreign Minister
کیپشن:   فائل فوٹو

اسلام آباد: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کشمیریوں کے یوم سیاہ کے موقع پر جاری بیان میں کہا ہے کہ آج دنیا بھر میں کشمیری سراپا احتجاج ہیں کیونکہ آئین کے تحت انھیں دیا گیا تشخص چھین لیا گیا ہے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ کشمیریوں کے بنیادی آئینی حقوق سلب کئے جا چکے ہیں۔ عالمی تنظیمیں مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اور بھارتی مظالم کا پردہ چاک کر رہی ہیں۔ آج بھارت میں یوم جمہوریہ کی پریڈ میں ٹینک نہیں ٹریکٹر نظر آ رہے ہیں۔ آج دہلی کی طرف بھارت کے کسان مارچ کر رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارتی حکومت کی منفی پالیسیوں سے بھارت کی معاشی صورتحال بگڑ چکی ہے۔ بھارت میں آج اقلیتیں خود کو غیر محفوظ محسوس کر رہی ہیں۔ بھارت میں مسلمان، بنگالی اور دلت سمیت کوئی محفوظ نہیں ہے۔ بھارت میں جمہوریت کے بجائے کالے قوانین کا نفاذ ہو رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بھارت میں سیکولرازم دبتا، ہندوتوا سوچ ابھرتی دکھائی دے رہی ہے۔ بھارت کے رویئے سے اس کے پڑوسی نالاں ہیں۔ بھارت کا نیپال، چین اور بنگلا دیش سمیت سب کے ساتھ رویہ بدلا ہوا ہے۔ بھارت اسی رویئے کے باعث پڑوسی ممالک سے دور ہو رہا ہے۔