سپریم کورٹ نواز شریف کی طبی بنیادوں پرضمانت کا فیصلہ آج سنائے گی

سپریم کورٹ نواز شریف کی طبی بنیادوں پرضمانت کا فیصلہ آج سنائے گی
خط میں نواز شریف کی 2003 سے 2019 تک کی میڈیکل رپورٹس شامل ہیں۔۔۔۔۔۔فائل فوٹو

اسلام آباد: سپریم کورٹ سابق وزیراعظم کی طبی بنیادوں پر ضمانت کی درخواست کا فیصلہ آج سنائے گی۔ چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بنچ سماعت کرے گا۔


سابق وزیراعظم نواز شریف نے سزا معطلی کیس میں مزید دستاویزات جمع کرا دیں ہیں۔ ان کی جانب سے ایک خط جمع کرایا گیا ہے جو ان کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کے نام ڈاکٹر لارنس نے لکھا ہے۔

ڈاکٹر لارنس کا لکھا گیا خط نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث نے سپریم کورٹ میں جمع کرایا۔ خط میں نواز شریف کی 2003 سے 2019 تک کی میڈیکل رپورٹس شامل ہیں۔

خیال رہے کہ سابق وزیراعظم نوازشریف نے العزیزیہ ریفرنس میں سزا معطل کرنے کے لیے سپریم کورٹ سے رجوع کر رکھا ہے۔ نواز شریف کو العزیزیہ ریفرنس میں 7 برس کی سزا سنائی گئی اور وہ اس وقت لاہور کی کوٹ لکھپت جیل میں قید ہیں۔ اس کے علاوہ انہیں ایون فیلڈ ریفرنس میں بھی سزا ہوئی ہے جو کہ عدالت نے معطل کر رکھی ہے۔