مکہ کے 60غیر منظم محلوں میں سے 30زمیں بوس

مکہ کے 60غیر منظم محلوں میں سے 30زمیں بوس
فوٹو عرب نیوز

مکہ مکرمہ :سعودی حکومت بھی پاکستان کی طرح غیر قانونی زمینوں اور قبضہ گروپوں کے گرد گھیرا تنگ  کرنے لگی۔سعودی سیکریٹری گورنریٹ مکہ مکرمہ خالد فدا نے اطلاع دی ہے کہ 7برس قبل مکہ مکرمہ کے ماسٹر پلان میں تقریباً60غیر منظم محلو ںکی نئی منصوبہ بندی کی گئی تھی۔ ان میں سے تقریباً30محلوں کی عمارتوں کو گرا دیا گیا ہے۔


جبل عمر کا منصوبہ غیر منظم محلوں کو جدید خطوط پر استوار کرنے کی روشن مثال ہے۔15برس قبل 230ہزار میٹر پر مشتمل جبل عمر علاقے کو جدید خطوط پر استوار کرنے کا آغاز کیا گیا تھا۔ اب یہاں مکہ مکرمہ اکنامک فورم کے اجلاس شایان شان طریقے سے ہورہے ہیں۔

سبق ویب سائٹ کے مطابق فدا نے توجہ دلائی کہ ایک اور بڑا منصوبہ زیر تکمیل ہے۔ یہ کنگ عبدالعزیز روڈ کا منصوبہ ہے۔ یہ تقریباً4کلو میٹر طویل ہوگا۔ یہ حرمین ٹرین اسٹیشن سے لیکر سرکلر روڈ وَن تک بنایا جائیگا۔

یہ مکہ مکرمہ کے غیر منظم محلوں سے ہوکر گزرے گا۔ یہ منصوبہ حرمین ٹرین اسٹیشن سے مسجد الحرام تک آنے جانے والوں کو غیر معمولی سہولت فراہم کریگا۔ اپنی نوعیت کا قابل دید منصوبہ ہوگا۔