شہباز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم

شہباز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم
عدالت ان کے مؤکل کی ضمانت پہلے ہی منظور کر چکی ہے، وکیل شہباز شریف۔۔۔۔۔۔فائل فوٹو

لاہور: لاہور ہائیکورٹ نے شہباز شریف کا نام ای سی ایل سے خارج کرنے کا حکم دے دیا۔ سابق وزیراعلیٰ پنجاب اور مسلم لیگ (ن) کے صدر شہبازشریف نے نام ای سی ایل سے نکالنے کے لیے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی تھی۔


لاہور ہائیکورٹ کے 2 رکنی بینچ نے شہباز شریف کی درخواست پر سماعت کی۔ اس دوران شہباز شریف کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ان کے مؤکل مسلسل نیب میں پیش ہو رہے ہیں اور ہر انکوائری میں نیب سے تعاون کر رہے ہیں جبکہ انہوں نے کبھی نیب میں پیشی سے انکار نہیں کیا۔

شہبازشریف نے وکیل نے دلائل میں کہا کہ عدالت ان کے مؤکل کی ضمانت پہلے ہی منظور کر چکی ہے۔ اس کیس میں بھی نیب کے حوالے سے عدالت کے ریمارکس سب کے سامنے ہیں۔

سابق وزیراعلیٰ کے وکیل نے مزید مؤقف اپنایا کہ شہباز شریف کا نام ای سی ایل سے نہ نکالنا بدنیتی پر مبنی ہے۔ ان کو اپنی بہو اور پوتی کی خیریت دریافت کرنے بیرون ملک جانا ہے۔

وکیل کے دلائل پر عدالت نے استفسار کیا کہ شہباز شریف کے خلاف دوسرے کیسز میں کیا پیشرفت ہے۔ اس پر عدالت کو بتایا گیا کہ کیسز پر انکوائری جاری ہے اور اب ریفرنس دائر ہونے ہیں۔

عدالت نے درخواست پر سماعت مکمل ہونے کے بعد شہباز شریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم دے دیا۔