گرمیوں میں چائے کا استعمال فائدے مند قرار

ؒٓؒٓلاہور: چائے کے بارے میں یہ خیال عام ہے کہ اس کی تاثیر گرم ہے جس کی وجہ سے لوگ موسم گرما شروع ہوتے ہی چائے اور کافی کا استعمال کم یا بالکل ختم کردیتے ہیں۔ ایسے ہی افراد کیلئے ماہرین نے حیران کن دعویٰ کیا ہے جس کے مطابق گرمیوں میں چائے کا استعمال فائدے مند ثابت ہوتا ہے۔

گرمیوں میں چائے کا استعمال فائدے مند قرار

لاہور: چائے کے بارے میں یہ خیال عام ہے کہ اس کی تاثیر گرم ہے جس کی وجہ سے لوگ موسم گرما شروع ہوتے ہی چائے اور کافی کا استعمال کم یا بالکل ختم کردیتے ہیں۔ ایسے ہی افراد کیلئے ماہرین نے حیران کن دعویٰ کیا ہے جس کے مطابق گرمیوں میں چائے کا استعمال فائدے مند ثابت ہوتا ہے۔


ایک سائنسی جریدے میں شائع ہونے والی تحقیق میں بتایا گیا تھا کہ اگر آپ اپنے جسم کو اندر سے ٹھنڈا رکھنا چاہتے ہیں تو ٹھنڈے مشروبات استعمال کرنے کے بجائے ورزش کریںکیونکہ ورزش کے دوران جسم سے پسینہ خارج ہوتا ہے جو جسم کی اندرونی حرات کو کم کرتا ہے اور جسمانی درجہ حرارت معمول کے مطابق رہتا ہے۔اسی طریقہ کار کے ذریعے چائے بھی ہمارے جسم پر یہی اثرات مرتب کرتی ہے۔جب ہم چائے یا کوئی گرم مشروب پیتے ہیں تو اس سے جسم کا اندرونی درجہ حرارت اچانک بڑھ جاتا ہے جو پسینے کی صورت باہر نکلنے لگتا ہے۔

تھوڑی دیر بعد پسینہ بہنے کے باعث یہ درجہ حرارت کم ہوتا جاتا ہے حتیٰ کہ یہ معمول کے درجہ حرارت سے بھی نیچے چلا جاتا ہے۔اس کے برعکس ٹھنڈے مشروبات وقتی طور پر جسم کو ٹھنڈک کا احساس فراہم کرتے ہیں تاہم ان سے اندرونی درجہ حرارت پر کوئی فرق نہیں پڑتا اور وہ جوں کی توں قائم رہتی ہے۔گویا کتنی ہی گرمیاں کیوں نہ ہوں، چائے کے شوقین افراد ہر موسم میں چائے سے لطف اندوز ہوسکتے ہیں۔