بھارت ریاست تلنگانہ کے وزیرِ اعلیٰ کے 50 کروڑ کے گھر پر عوام میں غصے کی لہر

بھارت ریاست تلنگانہ کے وزیرِ اعلیٰ کے 50 کروڑ کے گھر پر عوام میں غصے کی لہر

نئی دہلی: جنوبی بھارت کی ریاست تلنگانہ کے وزیرِ اعلیٰ کے 50 کروڑ روپے مالیت کے نئے محل نما گھر نے لوگوں میں غم و غصے کی لہر دوڑا دی ہے۔حیدرآباد شہر کے پوش علاقے میں واقع یہ عمارت نو ہزار مربع میٹر پر پھیلی ہوئی ہے۔اس گھر میں بلٹ پروف باتھ روم ہیں، ایک آڈیٹوریم ہے جس میں ڈھائی سو افراد کے بیٹھنے کی گنجائش ہے اور ایک میٹنگ ہال ہے جس میں پانچ سو لوگ بیٹھ سکتے ہیں۔


سب سے زیادہ تنقید کا نشانہ اس گھر کے بلٹ پروف باتھ روموں کو بنایا جا رہا ہے۔اس گھر کو وزیرِ اعلیٰ کے روحانی گرو چِنا جیئر سوامی نے آشیرواد دی۔ وزیرِ اعلیٰ کے چندرشیکھر راو¿ جمعرات کو یہاں منتقل ہوئے۔سوامی نے وزیرِ اعلیٰ کی خصوصی کرسی پر بیٹھ کر اسے بھی آشیرواد دی۔گھر کا نام پراگاتھی بھون ہے اور اسے واستو کے ماہرین کے صلاح و مشورے سے تعمیر کیا گیا ہے۔

راو¿ ہندو مت کے تعمیرات کے بارے میں قدیم رواج واستو پر یقین رکھتے ہیں۔ اس سے پہلے خبریں آئی تھیں کہ انھوں نے ریاستی سیکریٹیریٹ کمپلکس کو گرانے کی کوشش کی تھی کیوں کہ ان کے خیال میں اس کا واستو ریاست کے لیے سازگار نہیں تھا۔