سرحد پر کشیدگی، ہندو زائرین کا دورہ پاکستان منسوخ

سرحد پر کشیدگی، ہندو زائرین کا دورہ پاکستان منسوخ

اسلام آباد: پاکستان اور ہندوستان کے درمیان تعلقات میں کشیدگی کی وجہ سے بھارتی زائرین نے اپنا دورہ پاکستان منسوخ کردیا۔تقریباً 200 ہندو زائرین کو بھارت کے مختلف علاقوں سے کٹاس راج ٹیمپل (ضلع چکوال میں ہندوو¿ں کا مقدس ترین مقام) 28 نومبر کو آناتھا۔


تین روزہ دورے میں ہندو زائرین کو یہاں اپنی مذہبی رسومات ادا کرنی تھیں۔ متروکہ وقف املاک بورڈ اور چکوال کی ضلعی انتظامیہ نے ہندو زائرین کی آمد کی مناسب سے سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے تھے۔چیئرمین ای ٹی بی ٹی صدیق الفاروق نے ایک انٹرویو میں تصدیق کی کہ ہندو زائرین نے دورہ پاکستان منسوخ کردیا ہے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہندو زائرین کے دورے کی منسوخی کی وجہ پاکستان اور بھارت کے درمیان سرحد پر جاری کشیدگی ہے۔انہوں نے بتایا کہ 'ہم نے بھارتی زائرین کو ویزے جاری کردیے تھے لیکن ان کی اپنی حکومت نے انہیں پاکستان جانے سے روک دیا۔

ای ٹی بی ٹی کے ایڈیشنل سیکریٹری (مزارات) خالد علی نے بتایا کہ پاکستان نے 3 ہزار 319 سکھ یاتریوں کو حال ہی میں ویزے جاری کیے تھے تاہم ان میں سے صرف 2008 سکھ پنجا صاحب آئے۔انہوں نے بتایا کہ ہندو یاتری اب فروری میں شیو راتری کے موقع پر کٹاس راج آئیں گے۔واضح رہے کہ ہندو یاتری سال میں دو بار کٹاس راج آتے ہیں، ان کا پہلا دورہ فروری جبکہ دوسرا نومبر میں ہوتا ہے۔