وزیراعظم کیخلاف توہین عدالت کی درخواست پر سماعت آج ہو گی

وزیراعظم کیخلاف توہین عدالت کی درخواست پر سماعت آج ہو گی
عمران خان نے اعلیٰ عدلیہ کی تضحیک کی اور مذاق اُڑایا، درخواست گزار۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔فوٹو/ بشکریہ ریڈیو پاکستان

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کے خلاف توہین عدالت کی درخواست اسلام آباد ہائیکورٹ میں جمع کرائی گئی ہے جس پر آج سماعت ہو گی۔سابق انسپکٹر جنرل (آئی جی) پولیس سلیم اللہ خان کی جانب سے اسلام آباد ہائیکورٹ میں جمع کرائی گئی درخواست میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے 18 نومبر کی تقریر میں توہین عدالت کی اور عدلیہ کو متنازع بنانے کی کوشش کی۔


درخواست میں مؤقف اپنایا گیا کہ عمران خان نے اعلیٰ عدلیہ کی تضحیک کی اور مذاق اُڑایا لہٰذا عمران خان کی تقریر کی ریکارڈنگ اور ٹرانسکرپٹ جمع کرایا جا رہا ہے۔

درخواست میں کہا گیا ہے کہ توہین عدالت کا الزام ان کی تقریر کے متن سے واضح ہے لہٰذا عدالت سے استدعا ہے کہ عمران خان کو توہین عدالت کے قانون کے تحت سزا سنائی جائے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ درخواست پر آج سماعت کریں گے۔

یاد رہے کہ 18 نومبر کو وزيراعظم عمران خان نے ہزارہ موٹروے کی افتتاحی تقریب سے خطاب میں کہا تھا کہ ملکی نظام عدل کا تاثر یہی ہے کہ یہاں طاقتور کے لیے ایک قانون ہے اور کمزور کے لیے دوسرا، عدلیہ عوام میں اپنا اعتماد بحال کرے۔

وزیراعظم عمران خان نے چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ اور مستقبل کے چیف جسٹس گلزار احمد سے درخواست کی کہ انصاف دے کر ملک کو آزاد کریں۔ عدالت کے بارے میں تاثر درست کریں کیونکہ یہاں طاقتور فون کرکے فیصلے کرواتے رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت سے جو مدد چاہیے حکومت تیار ہے لیکن اس ملک میں عدلیہ نے عوام کا ااعتماد بحال کرنا ہے کہ یہاں سب کے لیے ایک قانون ہے۔

وزیر اعظم نے مزید کہا تھا کہ ماضی میں ایک چیف جسٹس کو فارغ کرنے کے لیے دوسرے جج کو نوٹوں کے بریف کیس دے کر بھیجا گیا، سیاسی مخالفین کو سزائیں دلوانے کے لیے فون پر فیصلے لکھوائے گئے۔