وزیر قانون فروغ نسیم مستعفیٰ، آرمی چیف ایکسٹینشن کیس لڑیں گے

وزیر قانون فروغ نسیم مستعفیٰ، آرمی چیف ایکسٹینشن کیس لڑیں گے
Image Source: File Photo

اسلام آباد:وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم مستعفیٰ آرمی چیف  ایکسٹینشن کیس میں کل عدالت پیش ہوں گے ،وفاقی وزیر نے یہ بڑا فیصلہ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے ان کا استعفیٰ قبول کر لیا ہے۔


تفصیلات کے مطابق ، وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد پریس کانفرنس میں بتایا کہ  حکومت کیلئے  فروغ نسیم کی خدمات قابل تعریف ہیں جس کی جتنی تعریف  کی جائے کم ہے۔

انہوں نے واضح کیا کہ وہ فروغ نسیم وزیر قانون کی حیثیت سے آرمی چیف ایکسٹینشن کیس میں عدالت عالیہ میں پیش نہیں ہو سکتے تھے، انہوں نے رضاکارانہ طور پر اپنا استعفیٰ وزیراعظم کو پیش کیا جسے منظور کر لیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ردالفساد سے لے کر اب تک کے آپریشنز آرمی چیف کی توسیع کی وجوہات ہیں۔ جنرل باجوہ نے بھارت کو سبق سکھایا اور کرتارپور راہداری کا راستہ دکھایا۔ تمام اتحادیوں نے وزیراعظم کے صوابدیدی اختیار پر حمایت کی ہے۔

شیخ رشید نے کہا کہ میڈیا میں فروغ نسیم کے استعفے سے متعلق غلط تاثردیا گیا، انہوں نے رضا کارانہ طور پر استعفیٰ دیا ہے۔