درندگی کی انتہا ،انسانوں نے انسانوں کو اپنی خوراک کا ذریعہ بنا لیا

درندگی کی انتہا ،انسانوں نے انسانوں کو اپنی خوراک کا ذریعہ بنا لیا

ماسکو:درندگی کی انتہاکا ایک اور قصہ رقم ہو گیا ۔انسانوں کو قتل کر کے اپنی خوراک کےلیے استعمال کرنے والا ایک جوڑا منظر عام پر آگیا۔


روسی جوڑا اب تک 30 افراد کو قتل کر کے اپنی خوراک کے لیے استعمال کر چکا ہے۔پولیس ذرائع کے مطابق اس آدم خور جوڑے نے اعتراف کیا ہے کہ انہوں نے کم ازکم 30 افراد کو مار کر انہیں اپنا نوالہ بنایا ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے اپنے گھر میں مرنے والوں کے اعضا جمع کرنے اور ان کے ساتھ تصاویر بنوانےکا اعتراف بھی کیا ہے۔

دمیتری بکشیو اور اس کی بیگم نے فریج اور فریزر کے علاوہ برتنوں اور مرتبانوں میں انسانی گوشت بھی جمع کر رکھا تھا۔آدم خور جوڑے نے اپنے بیان میں بتایا ہے کہ وہ لوگوں کو کوروالول نامی دوا پلا کر بے ہوش کرنے کے بعد انہیں آسانی سے کاٹ کر کھاتے تھے۔پولیس نے دونوں ملزمان کو گرفتار کر کے مزید تفتیش شروع کر دی ہے۔